Baseerat Online News Portal

سعودی عرب میں درخت کاٹنے والوں کی اب خیر نہیں؛ 10سال قید اور80 لاکھ ڈالرجرمانے کا اعلان

ریاض: 11؍نومبر (ذرائع) سعودی عرب میں درخت کاٹنے والوں کی اب خیر نہیں؛سرکاری اعلان کے مطابق 10سال قید اور80 لاکھ ڈالرجرمانہ عائد ہوگا۔ سعودی عرب کے سرکاری استغاثہ نے کسی درخت یا پودے کو کاٹنے والے فرد کو کڑی سزائیں سنانے کا اعلان کیا ہے اور ایسے کسی بھی فرد پر 7999018 ڈالر(تین کروڑ سعودی ریال) جرمانہ عاید کیا جائے گا۔اس کو10 سال تک قید کی سزا سنائی جائے گی یا یہ دونوں سزائیں بیک وقت بھی سنائی جاسکتی ہیں۔ سعودی پراسیکیوشن نے ٹویٹر پرلکھا ہے کہ ’’درختوں کی کٹائی،جڑی بوٹیوں یا پودوں کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے، انھیں ان کے تنے ،پتوں ، شاخوں یا کسی بھی حصے سے محروم کرنے یا ان کی مٹی کی تبدیلی کے ذمے دار افراد کو مملکت کے ماحولیاتی قانون کے تحت کڑی سزائیں سنائی جائیں گی۔‘‘ درخت کاٹنے والوں کے لیے ان کڑی سزاؤں کا اعلان سعودی عرب کے ویژن 2030ء کے مطابق کیا گیا ہے۔اس کا مقصد آیندہ عشرے کے اختتام تک مملکت میں ماحولیاتی استحکام کا حصول ہے۔ گذشتہ ماہ سعودی عرب کے وزیر برائے ماحول، آب اور زراعت عبدالرحمان الفاضلی نے نئی شجرکاری مہم کے آغاز کااعلان کیا تھا۔اس کے تحت اپریل 2021ء تک مملکت میں بنجرپن پر قابو پانے کے لیے ایک کروڑ درخت لگائے جائیں گے۔ وزیر برائے ماحول نے ٹویٹر پر لکھا تھا کہ اس شجرکاری مہم کا عنوان :’’آئیں ملک کو سرسبزوشاداب بنائیں‘‘ ہے،یہ 10 اکتوبر سے 30 اگست 2021ء تک جاری رہے گی۔ یہ مہم سرکاری اور نجی شعبے کے اشتراک سے چلا جارہی ہے۔اس کا مقصد بنجرپن کے اثرات کو کم کرنا،قدرتی حیات کی نشوونما اور معیارِزندگی کو بہتر بنانا ہے۔‘‘ انھوں نے بتایا تھا کہ وزارت اس پوری مہم کے دوران میں قومی مرکز برائے انسداد بنجر پن اور ہریالی نشوونما کے ساتھ مل کر کام کرے گی۔شجرکاری کی یہ مہم سعودی عرب کے ویژن 2030ء کے تحت برپا کی گئی ہے۔اس کا مقصد مملکت بھر میں بنجرپن کے خاتمے اور سبزے وہریالی کے ذریعے ماحولیاتی استحکام حاصل کرنا ہے۔ سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے 2016ءمیں ویژن 2030ء پیش کیا تھا۔اس کثیرجہت منصوبہ کا مقصد سعودی معیشت کو متنوع بنانا ، تیل کی آمدن پر انحصار کم کرنا اور مختلف معاشی شعبوں سے آمدن کے ذرائع پیدا کرنا ہے۔اس کے علاوہ اقوام متحدہ کے پائیدار ترقی کے اہداف 2030ء کا حصول ہے۔

کتاب کے حصول کے لیے رابطہ کریں۔ 
You might also like