Baseerat Online News Portal

حکومت تمام محاذپرناکام ،خوردنی تیل کی قیمتوں میں ایک سال پہلے کے مقابلہ میں 30 فیصدتک کا اضافہ

نئی دہلی، 20 نومبر (بی این ایس )
خوردنی تیل کی قیمتوں میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ خوردنی تیل کی قیمتوں میں یہ اضافہ نہ صرف خاندان کے لئے باورچی خانے کی قیمتوں میں اضافہ کررہا ہے، بلکہ حکومت کے لئے پریشانی کا سبب بھی ہے۔ مونگ پھلی، سرسوں، سبزیوں، سورج مکھی، سویا بین اور کھجور سمیت تمام خوردنی تیل کی اوسط قیمتوں میں اضافہ ہوا ہے۔ کھجور، سویا بین اور سورج مکھی کے تیل کی قیمتوں میں ایک سال پہلے کے مقابلے میں 20 سے 30 فیصد تک اضافہ ہوا ہے۔ قیمتوں میں اس اضافے نے لوگوں کی جیبوں پر بوجھ بڑھایا ہے۔وزارت صارفین کے امور کے پرائس مانیٹرنگ سیل کے اعداد و شمار کے مطابق جمعرات کے روز سرسوں کے تیل کی اوسط قیمت 120 روپے فی لیٹر تھی۔وہیں یہ ایک سال پہلے 100 روپے فی لیٹر تھا۔ اسی طرح سبزیوں کے تیل کی اوسط قیمت ایک سال قبل 75.25 روپے فی کلو کے مقابلے میں بڑھ کر 102.5 روپے فی کلو ہوگئی ہے۔سویابین آئل کی ماڈل قیمت 110 روپے فی لیٹر ہے، جبکہ ایک سال قبل یہ قیمت 90 روپے فی لیٹر تھی۔ پام آئل اور سورج مکھی کے تیل کی قیمتوں میں بھی ایک سال پہلے کے مقابلہ میں کافی اضافہ ہوا ہے۔پہلے پیاز کی قیمتوں میں اضافے نے عوام کو پریشان کیا تھا لیکن اب پیاز کی قیمتیں کم ہوگئی ہیں۔ پیاز کی قیمتوں میں یہ کمی تقریبا 30000 ٹن پیاز کی درآمد کی وجہ سے دیکھی گئی ہے۔ اس کے علاوہ آلو کی قیمتیں بھی مستحکم ہوئیں لیکن خوردنی تیل کی قیمتوں میں اضافہ جاری ہے۔

You might also like