Baseerat Online News Portal

صوبائی اور مرکزی حکومت عوام کو مختلف عنوانات سے لوٹ رہی ہے

اترپردیش سے مکمل طور پر ٹول پلازہ ختم کئے جائیں: واجد علی تیاگی
دیوبند،22؍ نومبر(سمیر چودھری؍بی این ایس)
پچھم پردیش مکتی مورچہ کے صوبائی جنرل سکریٹری واجد علی تیاگی نے کہاکہ پورے اترپردیش سے ٹول پلازہ مکمل طورپر ختم کئے جائیں۔ مورچہ کی جانب سے دیوبند میں منعقد ایک میٹنگ میں خطاب کرتے ہوئے واجد علی تیاگی نے مطالبہ کیا ہے کہ پورے اترپردیش سے ٹول پلازہ مکمل طور پر ختم کئے جائیں۔ انہوں نے بتایاکہ سال 2020-21؍ کے لئے صوبائی حکومت کا بجٹ 5؍ لاکھ بارہ ہزار 761؍ کروڑ روپیہ کا جبکہ مرکزی حکومت کا بجٹ 30؍ لاکھ 42؍ہزار 230؍ کروڑ روپیہ کا ہے لیکن اس کے باوجود ان حکومتوں نے عوام کو لوٹنے کے لئے سارے دروزاے کھول رکھے ہیں۔ اسلئے تنظیم صوبائی حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ صوبائی سطح پر واقع تمام ٹول پلازہ کو یکسر ختم کیاجائے ۔ انہوںنے ناراضگی کااظہا رکرتے ہوئے کہاکہ گزشتہ ہفتے شروع کئے جانے والے کولکی ٹول پلازہ عوام کے ساتھ سراسرنا انصافی ہے۔ واجد علی نے کہاکہ اگر صوبائی بجٹ کو ایمانداری سے خرچ کیاجائے تو صوبائی تعلیمی اداروں،اسپتالوں،سڑکوں کی تعمیر اور دیگر محکموں میں کسی طرح کوئی پریشانی نہیں آسکتی ہے،لیکن چونکہ موجودہ صوبائی اور مرکزی بی جے پی حکومتیں کسان ،مزدور مخالف ہیں اسلئے عوام کو طرح طرح کے عنوانات سے لوٹاجارہاہے۔واجد علی نے ریاستی حکومت کے استحصالی رویہ کا ذکر کرتے ہوئے کہاکہ آئے دن بجلی محکمہ اورگناّ محکمہ سمیت دیگر محکموں کے ذریعہ کسانوں کااستحصال کیاجارہاہے، پرالی جلانے پر کسانوں کے خلاف مقدمات قائم کرکے انہیں ہراساں کیاجارہاہے۔ انہوں نے کہاکہ اس استحصالی رویہ کے خلاف ان کی تنظیم جلدی ہی خاکہ تیار کرکے بڑے پیمانے پر تحریک چلائے گی۔ انہوں نے کہاکہ مغربی اضلاع پر مبنی اگر ایک علیحدہ ریاست کی تشکیل ہوتی ہے تو سب سے پہلے کسانوں کے استحصال کو ختم کیاجائے گا اور ٹول پلازہ مکمل طورپر بندکردیئے جائینگے۔ انہوںنے کسان اور مزدوروں سے اپیل کی وہ متحد ہوکر علیحدہ ریاستی کی تشکیل کی مہم میں مورچہ کا ساتھ دیں تاکہ مغربی اضلاع ترقی کرسکیں۔ واجد علی نے کہاکہ تنظیم کے صدر بھگت سنگھ ورما کی قیادت میںیہ لڑائی آخرتک لڑی جائے گی۔ میٹنگ کی صدارت گروندر سنگھ نے کی جبکہ نظامت کے فرائض وسیم چودھری نے انجام دیئے۔ میٹنگ میں جاوید تیاگی جھبیرن،اسعد قریشی،سکندر صدیقی،حافظ اسماعیل،چودھری نواب او رنیٹو وغیرہ سمیت دیگر کارکنان موجودرہے۔

You might also like