Baseerat Online News Portal

تیجسوی یادوکاجدیوپرپلٹ وار،بدعنوانی کے الزام پراشوک چودھری کوگھیرا

پٹنہ 22نومبر(بی این ایس )
بدعنوانی کے الزامات پربہارحکومت کے وزیر میوہ لا چودھری کے استعفیٰ کا معاملہ ابھی ٹھنڈا نہیں ہوا ہے کہ ایک اور وزیر اشوک چودھری کی اہلیہ سے متعلق بدعنوانی کا معاملہ ایک بار پھر منظرعام پر آیا ہے۔ ڈاکٹر میوہ لال چودھری کے بعد ریاست میں جے ڈی یوکے ایگزیکٹو چیئرمین اور وزیر اشوک چودھری پر بات ہورہی ہے۔ جے ڈی یولیڈروں نے میوہ لال چودھری کے بہانے ہفتہ کے روز حزب اختلاف کے لیڈر تیجسوی یادو کو نشانہ بنایا۔ جے ڈی یو نے یہ دکھانا چاہاہے کہ جیسے ہی بدعنوانی سے متعلق معاملہ سامنے آیا،میوہ لال کو وزیر کے عہدے سے ہٹادیاگیا ہے ، جبکہ تیجسوی یادو متعددسنگین مقدمات ہونے کے باوجود ایک بار پھر اپوزیشن لیڈر کا عہدہ سنبھالنے جا رہے ہیں۔ جے ڈی یونے تیجسوی یادوسے کہاہے کہ وہ سیاسی تقدس کامظاہرہ کریں۔بہارمیں حزب اختلاف کے لیڈرتیجسو ی یادونے اپنے ٹویٹر ہینڈل سے اشوک چودھری پرحملہ کیا۔ ایک ٹویٹ پر اپنے ردعمل کااظہار کرتے ہوئے انہوں نے لکھا ہے کہ جے ڈی یوکے ایگزیکٹو چیئرمین اور وزیر مسٹر اشوک چودھری پر بینک جعلسازی کا الزام ہے ، سی بی آئی تحقیقات کررہی ہے ۔ عدالت میں ایک کیس ہے۔ ان کی ایمانداری کو دیکھیں،کہا جاتا ہے کہ بیوی کی بدعنوانی کوئی بڑی بات نہیں ہے۔در حقیقت گفتگو کے دوران وزیر تعمیرات و سماجی بہبود کے وزیر اشوک چودھری نے نتیش کمار کے خلاف لگائے گئے الزام کے بارے میں کہا تھا کہ صرف الزامات لگانے سے کچھ نہیں ہوتا ہے۔ جب تک اس سے چارج نہیں لگایا جاتا ، کوئی فائدہ نہیں ہوتا۔

You might also like