Baseerat Online News Portal

قدآور کانگریسی لیڈر احمد پٹیل کا سانحۂ ارتحال ، لیڈران کا اظہارِ افسوس

مخلص دوست کھودیا،جنہوں نے زندگی پارٹی کیلئے وقف کردی تھی : سونیا گاندھی
نئی دہلی ، 25؍نومبر ( بی این ایس )
کانگریس کے سینئر رہنما اور گجرات سے راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ ۷۱؍سالہ احمد پٹیل بدھ کے روز علی الصبح انتقال کر گئے(اناللہ وانا الیہ راجعون)۔خیال رہے کہ یکم اکتوبر کو احمد پٹیل کو کرونا انفیکشن ہوا تھا۔ انہیں 15 اکتوبر کو گروگرام کے میدانتا اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔ جب مرحوم احمد پٹیل نے یہ محسوس کیا کہ انہیں کرونا ہوگیا ہے ، تو انہو ں نے اپنے تمام قریبی اور رابطے میں آنے والوں سے اپیل کی تھی کہ وہ خود کو آئی سولیٹ کریں اور ایک کرونا ٹیسٹ کروائیں۔مرحوم احمدپٹیل کے بیٹے فیصل پٹیل نے ایک ٹویٹ میں کہا کہ بڑے افسوس کے ساتھ کہنا پڑرہا ہے کہ میرے والد احمد پٹیل کا بدھ علی الصبح ساڑھے تین بجے انتقال ہوگیا ہے۔ تقریباً ایک ماہ قبل ، ان کی کرونا رپورٹ پازیٹیو آئی تھی اور ان کے جسم کے کئی حصوں نے کام کرنا چھوڑ دیا تھا ، جس کے بعد ان کی موت ہوگئی تھی، اللہ نے انہیں اپنے جوارِ رحمت میں جگہ عطا فرمائے (آمین ) فیصل پٹیل نے اپنے تمام خیر خواہوں سے اپیل کی کہ وہ کرونا ہدایات پر عمل کریں اور معاشرتی فاصلہ برقرار رکھیں۔وزیر اعظم نریندر مودی نے ٹوئٹ کیا کہ مرحوم احمد پٹیل کے انتقال سے مجھے بھی دکھ ہے۔ انہوں نے عوامی زندگی میں سماج کیلئے کئی سال تک کام کیا۔ وہ اپنے تیز دماغ کے لئے جانے جاتے تھے۔ ان کی آتما کو شانتی ملے ۔وہیں راہل گاندھی نے کہا کہ آج کا دن افسوسناک ہے۔ احمد پٹیل کانگریس پارٹی کے ستون تھے، وہ ہمیشہ پارٹی کے لئے ہمیشہ وقف رہے اور مشکل وقتوں میں ہمیشہ پارٹی کے ساتھ شانہ بشانہ ملا کر کھڑے رہے، ہمیشہ ان کی یاد آتی رہے گی۔ سونیاگاندھی نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا میں نے ایک ساتھی کھو دیا جس نے اپنی پوری زندگی کانگریس کے لئے وقف کردی۔ ان کے انتقال سے پارٹی کو ناقابلِ تلافی نقصان ہوا ہے مرحوم کے اہل خانہ سے میری تعزیت۔ خیال رہے کہ مرحوم احمد پٹیل 21 اگست 1949 کو گجرات کے بھروچ ضلع کے پیرامن گاؤں میں پیدا ہوئے تھے۔ وہ 3 بار لوک سبھا رکن پارلیمنٹ (1977 سے 1989) اور 4 بار راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ (1993 سے 2020) رہے۔ انہوں نے بھروچ لوک سبھا سیٹ سے 1977 میں پہلا الیکشن لڑا تھا اور 62 ہزار 879 ووٹوں سے کامیابی حاصل کی تھی۔ اس وقت ان کی عمر صرف 28 سال تھی۔ 1980 میں احمد پٹیل بھروچ سے 82 ہزار 844 ووٹوں اور 1984 میں 1 لاکھ 23 ہزار 69 ووٹوں سے جیتے تھے ۔پٹیل نے جنوری سے ستمبر 1985 تک اس وقت کے وزیر اعظم راجیو گاندھی کے پارلیمانی سکریٹری کی حیثیت سے خدمات انجام دیں۔ سونیا 2001 سے گاندھی کی سیاسی مشیر تھے۔ جنوری 1986 میں وہ گجرات کانگریس کے صدر بنے۔ وہ 1977 سے 1982 تک یوتھ کانگریس کمیٹی کے صدر رہے۔ ستمبر 1983 سے دسمبر 1984 تک وہ کانگریس کے جوائنٹ سکریٹری رہے۔

You might also like