Baseerat Online News Portal

کورونا سے بچاو کیلئے ماسک مجبوری نہیں ضروری ،ماسٹر امجد علی  کورونا وائرس کے حملہ کو بے اثر کرنے کیلئے قوت مدافعت کو مضبوط کرنا ہوگا  احتیاطی تدابیر پرعمل نہ کرنا اور جسم کو خطرے میں ڈالنا سماج کے تئیں جرم ،

 

رفیع ساگر /بی این ایس

جالے ۔۔۔ آج ایک طرف ہمارے ملک کے عظیم سائنسدانوں کی پوری ٹیم کورونا سے بچاو کیلئے ویکسین بنانے میں سرگرم ہیں وہیں دوسری طرف ملک کی دارالحکومت سمیت دیگر ریاستوں میں کورونا انفیکشن کا پھیلاو بدستور جاری ہے ایسے میں ملک کے ایک ذمہ دار شہری ہونے کے ناطے یہ ہمارا فرض ہے کہ ہم تمام حکومتی و حفاظتی احکامات پر عمل کرتے ہوئے کورونا وائرس کی زد میں آنے سے خود بھی بچیں اور دوسروں کو بھی بچائیں کیونکہ علم ہوتے ہوئے بھی جان بوجھ کر اپنے جسم کے استعداد کو خطرے میں ڈالنا نہ صرف ہماری سب سے بڑی لاپرواہی ہے بلکہ معاشرہ کے تئیں ہمارا جرم بھی ہے۔مذکورہ خیالات کا اظہار مقامی بلاک کے دوگھرا گاوں میں واقع امجد کلاسیز کے ڈائریکٹر امجد علی نے نمائندہ کے ساتھ ایک خصوصی ملاقات میں کیں۔انہوں نے کہا کہ یہ بات حقیقت ہیکہ کورونا وائرس ایک خطرناک موذی وائرس ہے جس کا ہنوز کوئی موثر دوا نہیں آسکا ہے لیکن تقریباً ہر ایک ملک کی جانب سے اس کے لئے ویکسین عنقریب آنے کا دعویٰ کیا جارہا ہے اسلئے فی الحال احتیاط ہی اس کا علاج ہے۔مسٹر امجد علی نے کہا کہ ایسا دیکھا جارہا ہیکہ عوام اب کورونا کے ڈر کو دل سے نکال کر بغیر ماسک یا دیگر احتیاطی تدابیر کے بے خوف و خطر گھوم رہے ہیں جبکہ ایسا نہیں یونا چاہئے ہمیں ماسک کو مجبوری نہیں بلکہ ضروری سمجھتے ہوئے استعمال کرنا چاہئے کیونکہ اب تک متعدد تحقیقات سے صاف طور پر واضح ہے کہ ماسک کے استعمال کرنے سے ہملوگ 90 فیصد تک کورونا وائرس کے یلغار سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ گزشتہ روز مختلف ذرائع ابلاغ سے جو خبریں آئی ہیں جس میں ملک کے وزیر اعظم معزز نریندر مودی نے ہندوستان کے احمد آباد ، حیدر آباد اور پونے میں تیار ہو رہے دیشی ویکسین کے لیبارٹریز میں جاکر نہ صرف سائنسدانوں کی حوصلہ افزائی کئے بلکہ وزیر اعظم کے اس لائق ستائش عمل سے یہاں کے شہری اب مطمئن ہوچکے ہیں کہ ملک میں جلد ہی سستا اور بہترین ویکسین آنے جا رہا ہے اسلئے یہ ہملوگوں کیلئے اطمینان بخش خبر ہے لیکن جب تک ملک میں کورونا کے کیسیز میں اضافہ جاری ہے اس وقت تک ہمیں کورونا کو ہلکے میں نہیں لینا چاہئے بلکہ ماسک ، سماجی فاصلے سینی ٹائزنگ سمیت دیگر احتیاطی تدابیر اپناتے رہنی چاہئے اس کے بعد ہی ہملوگ کورونا کو شکست دے سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے حملہ کو بے اثر کرنے کیلئے ہمیں قوت مدافعت کو مضبوط کرنا ہوگا اور اس کیلئے مقوی غذا کے علاوہ ریگولر ورزش کو اپنی عادت میں شامل کرنا ہوگا کیونکہ یہ ایک ایسا عمل ہے جو حفظان صحت کیلئے کار آمد اور مفید ہے۔

 

 

You might also like