Baseerat Online News Portal

مودی جی بتا ئیں کہ نیتا جی کی موت کا پردہ کب اٹھائیں گے: ایس ایم آصف

آل انڈیا مائنارٹیزفرنٹ نے مغربی بنگال میں انتخابات لڑنے کا فیصلہ کیا،گٹھ بندھن کے ساتھ ایک تہائی نشستوں پر الیکشن لڑیں گے
نئی دہلی یکم دسمبر(بی این ایس )
آل انڈیامائنارٹیزفرنٹ کے قومی ایگزیکٹونے مغربی بنگال میں ہونے والے آئندہ قانون ساز اسمبلی کے انتخابات لڑنے کافیصلہ کیا ہے۔ اس کے ساتھ ہی یہ بھی فیصلہ کیاگیا ہے کہ ان کی جماعت تمام سیکولر جماعتوں کے ساتھ اتحاد کرے گی۔آل انڈیامائنارٹیزفرنٹ کے صدر ایس ایم آصف نے پارٹی کے ایگزیکٹو اجلاس کے بعد جاری کردہ ایک بیان میں کہا ہے کہ مغربی بنگال میں ہماری پارٹی قانون ساز اسمبلی کی کل 294 نشستوں میں سے 100 پرمقابلہ کرے گی اورپارٹی کی قیادت وزیراعلیٰ ممتا بنرجی کریں گی۔ سیکولر جمہوری اتحادمیں شامل رہیں گے تاکہ فرقہ واریت کا زہر بونے والی بی جے پی اس ریاست میں کامیاب نہیں ہوسکتی ہے۔انہوں نے کہاہے کہ بہار کے بعدبی جے پی نے مغربی بنگال پر اپنا ہوم وزن لگایا ہے جسے بنگال کے عوام ناکام بنائیں گے۔ جناب آصف نے کہاہے کہ بی جے پی اس وقت بنگال میں ان سبھی ممالک اور عقیدت مندوں کوبدنام کرنے کی ناکام کوشش میں مصروف ہے۔جناب آصف نے یاد دلایا کہ یہ وہی بی جے پی اور وزیر اعظم نریندر مودی ہیں جنہوں نے کہا تھا کہ وہ بابو سبھاش چندر بوس کی فائل کو عام کریں گے۔ نریندر مودی نے اپنے چھ سالہ دور حکومت میں نیتا جی کی موت کو ایک معمہ بنا رکھا ہے۔ آصف نے کہا کہ مودی جی کے پاس ابھی بھی نیتا جی کی موت کے اسرار کو کھولنے کا وقت ہے ، لیکن وہ ایسا نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ مودی جی بتائیں کہ ان کے سامنے کیا مجبوری ہے جو نیتا جی کی موت کا راز افشا نہ کریں۔ اب وہ اس معاملے کے بارے میں عوامی رائے کو ختم نہیں کرسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی بنگال میں بھی اپنا فرقہ وارانہ ایجنڈا نافذ کرنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کے ووٹوں سے مرکز میں برسر اقتدار آنے والی بی جے پی بھی کسان مخالف ثابت ہوئی ہے ، اب یہ ایک بار پھر بنگال میں سی اے اے اور این آر سی جیسے معاملات اٹھائے گی۔ ملک اورخاص طور پر بنگال کو اس اقدام سے محتاط رہنا ہوگا۔

You might also like