Baseerat Online News Portal

خودکشی کیس:ارنب گوسوامی عدالت میں پیش نہیں ہوئے

ممبئی 7جنوری(بی این ایس )
ٹیلی ویژن کے مبینہ اورمتنازعہ صحافی ارنب گوسوامی خودکشی کیس میں ملزم ہیں ۔وہ آج مہاراشٹر کے ضلع رائے گڑھ میں عدالت کے روبرو پیش نہیں ہوئے جس کے بعد استغاثہ نے ان کے خلاف وارنٹ جاری کرنے کی درخواست کی ہے۔علی بابا پولیس نے نومبر 2020 میں ہوم ڈیزائنر انواء نائک کی مبینہ خودکشی کے سلسلے میں گوسوامی اور دو دیگر افراد کو گرفتارکیاتھا۔ بعد ازاں انہیں سپریم کورٹ نے ضمانت دے دی۔جمعرات کے روز جب یہ معاملہ علی بابا سیشن کورٹ کے سامنے آیا تو گوسوامی کے وکیل نے پیشی سے استثنیٰ مانگا۔ عدالت نے اس دن کے لیے استثنیٰ دے دیا۔ دو دیگر ملزمان فیروز شیخ اور نتیش سرڈا بھی پیش نہیں ہوئے۔اسپیشل پبلک پراسیکیوٹر پردیپ گھرت نے اس پر سخت اعتراض کیا اور کہاہے کہ ملزم کو شناخت کے لیے پیش ہونا چاہیے تھاکیونکہ عدالت کے چارج شیٹ کا نوٹس لینے کے بعد یہ پہلی سماعت تھی۔انہوں نے گوسوامی اور دو دیگر کے خلاف وارنٹ جاری کرنے کی بھی درخواست کی۔عدالت نے درخواست زیر التواء رکھتے ہوئے کہاہے کہ چونکہ کورونا وائرس کی وجہ سے پابندیاں 31 جنوری تک نافذ ہیں ، لہٰذا اس طرح کی کوئی کارروائی نہیں کی جاسکتی ہے۔کیس میں آئندہ سماعت 6 فروری کوہوگی۔پراسیکیوٹر نے بتایاہے کہ اس تاریخ کو ملزم کو ذاتی طور پر یا ویڈیو کانفرنس کے ذریعے پیش ہونے کی ضرورت ہوگی۔پولیس کی چارج شیٹ کوقبول کرنے کے بعد عدالت نے تمام ملزمان کو 7 جنوری کو پیش ہونے کو کہا تھا۔ تینوں پردفعہ 306 اور 109 کے تحت مقدمہ درج کیا جارہا ہے۔چارج شیٹ میں دعویٰ کیاگیاتھا کہ نائک نے اپنی ماں کو قتل کرکے مئی 2018 میں اپنے علی باباگھرمیں پھانسی دے دی تھی کیونکہ وہ تینوں ملزمان کی فرموں کی طرف سے واجبات کی عدم ادائیگی کے سبب دباؤمیں تھا۔ریپبلک ٹی وی کے چیف ایڈیٹر ان چیف گوسوامی نے الزام لگایا ہے کہ پولیس نے اس کیس کو دوبارہ کھول دیا ہے جو سن 2019 میں بند کردیا گیا تھا کیونکہ ریاستی حکومت انہیں ہراساں کرنا چاہتی ہے۔

You might also like