Baseerat Online News Portal

شیوسینا کا نتیش پر حملہ : بہار میں کورونا سے زیادہ خطرناک جرائم کے اعدادوشمار ہیں

ممبئی،08؍جنوری (بی این ایس )
شیوسینا نے بہار کے وزیر اعلی نتیش کمار پر حملہ کیا ہے۔ شیوسینا نے کہا کہ حال ہی میں ایک خبر یہ آئی کہ مظفر پور میں ایک استاد کے 22 سالہ بیٹے کو بے دردی سے قتل کیا گیا۔ والد اسکول گئے تھے اور بہن والدہ کا علاج کروانے پٹنہ گئی تھی۔اسی دوران غنڈے گھر میں گھس آئے اور آشوتوش کو مارا پیٹا پھر اس کے ہاتھ پاؤں اور نجی حصے پر رسی باندھ کر اسے گھر میں لٹکا دیا۔ کچھ دن پہلے پڑوس میں ایک دبنگ خاندان کے ساتھ ٹیچرکی فیملی کی لڑائی ہوئی تھی۔ لہٰذا ان پر براہ راست متاثرہ کے اہل خانہ کا الزام ہے۔ تعجب خیر بات یہ ہے کہ ہلاک ہونے والے اشوتوش کا کزن خود بھی آئی پی ایس آفیسر ہے ، اس کے باوجود دبنگوں نے اس واقعے کو انجام دینے سے پہلے خوف زدہ نہیں ہوئے۔ بہار میں بڑھتے ہوئے جرائم کی طرف توجہ مبذول کرتے ہوئے شیوسینا نے کہا کہ مظفر پور میں ہی شرپسندوں نے کوچنگ سے واپس آنے کے دوران پستول کی نوک پر دسویں کی ایک طالبہ کو ہوس کا نشانہ بنایا۔ کسی طرح بچی نے شرپسند عناصر کے چنگل سے اپنی جان بچائی اور کنبہ کے ہمراہ ایک رپورٹ لکھانے پولیس اسٹیشن پہنچی ، رہی سہی عزت پولیس اہلکاروں کے لفظی تنقید سے تار تار ہوگئی۔ تمام متاثرین کی طرح اس متاثرہ کی شکایت کو بھی سنجیدگی سے نہیں لیا گیا۔ یہ تصویر نہ صرف بہار کے مظفر پور کی ہے ، بلکہ یہ حالت بہار میں ہر جگہ ہے۔چاہے دربھنگا ہو یا جہان آباد ، بھاگل پور ہو یا ارریہ ، سوپل یا پورنیہ یا گوپال گنج یا دارالحکومت پٹنہ ہو۔ ہر جگہ مجرم بے خوف ہو کر جرم کا ارتکاب کررہے ہیں۔ بہار میں ، قتل ، اجتماعی زیادتی ، ڈکیتی ، بھتہ خوری ، اغوا ، شادی ، چھیڑ چھاڑ اور کے اعداد و شمار یوپی سے مقابلہ کررہے ہیں ، عوام کو ایسا لگنے لگا ہے اور اس میں حقائق بھی ہیں۔ چیف منسٹر نتیش کمار ہوں یا حکمران بھارتیہ جنتا پارٹی ان دونوں کو اس زمینی حقیقت سے کوئی خاص فکر نہیں ہے۔

You might also like