Baseerat Online News Portal

گولی سے زخمی وارڈ ممبر کی علاج کے دوران موت، گاوں میں پولیس کی نقل و حمل تیز، لاش پہنچتے ہی مچا کہرام

رفیع ساگر /بی این ایس
جالے۔ سمری پنچایت میں نل جل منصوبہ کے تحت ٹھیکیداری کو لیکر پیدا ہوئے تنازعہ میں ٹیچر کی رہائش گاہ پر گولی سے زخمی ہوئے وارڈ 12 کے ممبر گنیش ساہ کی 3 دن بعد پی ایم سی ایچ میں علاج کے دوران ہفتہ کی صبح موت ہوگئی۔ پولیس نے تمام ملزمین پر اب آئی پی سی کے دفعہ 302 کے تحت قتل کا میمورنڈم عدالت کو سونپا ہے۔ اس کے بعد مکھیا وشوناتھ پاسوان ، انیل یادو گوپی ، بھولر یادو ، لال بابو ساہ کو عدالتی تحویل میں جیل بھیج دیا ہے۔ وہیں فرار چل رہے ٹیچر ببن یادو کو لیکر جگہ جگہ چھاپہ ماری جاری ہے۔ ادھر موت کی خبر گاوں میں پہونچتے ہی کہرام مچ گیا وہیں مقامی لوگ مشتعل ہوکر فرار ملزم کی گرفتاری کے علاوہ گرفتار شدہ تمام ملزمین کو سخت سزا دینے اور متاثرہ کے کنبہ کو سرکاری نوکری کا مطالبہ زوڑ پکڑ لیا۔ موقع پر بھیڑ کو قابو میں کرنے کیلئے پولیس انسپیکٹر بسنت کمار جھا ، تھانہ صدر ہری کشور یادو ، کمتول تھانہ صدر سرور عالم سمیت پولیس اہلکاروں نے رائٹ کنٹرول گاڑی کے ساتھ فلیگ مارچ کئے۔ انتظامیہ نے موقع پر موجود عوام کو یقین دہانی کرائی کہ اسپیڈی ٹرائل چلاکر تمام ملزمین کو کڑی سزا دی جائے گی۔ ادھر قتل معاملہ کے آئی او داروغہ اودھ کشور یادو کے بیان پر آرمس ایکٹ کے تحت ایف آئی آر درج کر آگے کی کارروائی شروع کردی گئی ہے۔ وہیں انتظامیہ نے لوگوں سے امن و شانتی بنانے کی اپیل کرتے ہوئے حساس مقامات پر پولیس چوکسی بڑھا دی ہے۔ ادھر سینئر پولیس کپتان بابو رام و سٹی ایس پی اشوک کمار مقامی پولیس سے معلومات حاصل کر نظم و نسق پر کڑی نظر جمائے ہوئے ہیں۔دیر شام میں جب وارڈ ممبر کی لاش گھر پہنچی تو کہرام مچ گیا۔

 

You might also like