Baseerat Online News Portal

جن کونہیں ملناتھاان تک پہنچاپی ایم کسان منصوبہ کاپیسہ

مرکز نے غلط لوگوں کوبھیج دئے 1364 کروڑ روپے، آر ٹی آئی میں ہوا انکشاف
نئی دہلی، 10 جنوری (بی این ایس )
وزیر اعظم کسان سمان ندھی اسکیم کے تحت 20.48 لاکھ نا اہل لوگوں کو 1364 کروڑ روپے کی ادائیگی کی گئی ہے۔ یہ معلومات مرکزی وزارت زراعت نے حق اطلاعات ایکٹ (آر ٹی آئی) کے تحت طلب کی گئی معلومات کے جواب میں دی ہے۔پردھان منتری کسان سمان نیدھی (پی ایم – کسان) اسکیم سن 2019 میں مرکزی حکومت نے شروع کی تھی اور اس کے تحت معمولی یا چھوٹے کسان یا جن کے پاس دو ہیکٹر سے بھی کم زرعی اراضی ہے، انہیں ایک سال میں تین مساوی قسطوں میں مجموعی طور پر 6 ہزار روپے ملتے ہیں۔آر ٹی آئی درخواست کے جواب میں مرکزی وزارت زراعت نے بتایا کہ ناجائز مستفیدین کی دو اقسام کی نشاندہی کی گئی ہے، جن میں پہلے ’نااہل کسان‘ ہیں، جبکہ دوسرے ’انکم ٹیکس بھرنے والے کسان‘ ہیں۔کامن ویلتھ ہیومن رائٹس انیشی ایٹو (سی ایچ آر آئی) سے وابستہ آر ٹی آئی درخواست دہندہ وینکٹ ٹیش نائک نے یہ اعدادوشمارحکومت سے حاصل کئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ نااہل فائدہ اٹھانے والوں میں سے نصف سے زیادہ (55.58 فیصد) انکم ٹیکس ادا کرنے والے کے زمرے میں ہیں۔نائک نے کہاکہ بقیہ 44.41 فیصد ایسے کسان ہیں جو اسکیم کی اہلیت کو پورا نہیں کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا رپورٹس کے مطابق نااہل فائدہ اٹھانے والوں سے ادا کی گئی رقم کی وصولی کا عمل شروع کردیا گیا ہے۔آر ٹی آئی درخواست دہندہ نے بتایا کہ اعداد و شمار کے مطابق نااہل مستحقین کی ایک بڑی تعداد پانچ ریاستوںپنجاب، آسام، مہاراشٹر، گجرات اور اتر پردیش میں ہے۔معلومات کے مطابق پنجاب سرفہرست ہے جہاں کل نا اہل مستحقین میں سے 23.6 فیصد (یعنی 4.74 لاکھ) رہتے ہیں، اس کے بعد نا اہل مستحقین میں 16.8 فیصد (3.45 لاکھ مستحقین) آسام کے ہیں۔ مہاراشٹر میں نااہل مستفید افراد میں سے 13.99 فیصد (2.86 لاکھ مستحقین) ہیں۔ نائک نے کہا کہ اس کے بعد گجرات اور اتر پردیش میں وہ جگہ ہے جہاں بالترتیب 8.05 فیصد (1.64 لاکھ مستحقین) اور 8.01 فیصد (1.64 لاکھ) مستفیدین رہتے ہیں۔

You might also like