Baseerat Online News Portal

کجریوال کی ڈگر پر پانڈیچری کے وزیراعلیٰ

لیفٹیننٹ گورنرکیخلاف تین دنوں سے راج بھون کے باہر کررہے ہیں احتجاج
پانڈیچری ، ۱۰؍جنوری ( بی این ایس )
پانڈیچری کے وزیر اعلی وی نارائن سامی گذشتہ تین دن سے راج بھون کے باہر احتجاج کررہے ہیں۔ ان کا مطالبہ ہے کہ مرکزی حکومت لیفٹیننٹ گورنر کرن بیدی کو واپس بلائے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ لیفٹیننٹ گورنر ریاست کی منتخب آئینی حکومت کو کام کرنے کی اجازت نہیں دے رہی ہیں اور روزمرہ کے کاموں میں مانع ہیں۔پانڈیچری میں کانگریس کے زیرقیادت سیکولر ڈیموکریٹک الائنس (ایس ڈی اے) کی زیرقیادت حکومت ہے۔راج بھون کے باہر دھرنے کے احتجاج میں وزیر اعلی وی نارائن سامی ، پی سی سی کے صدر اے وی سبرامنیم کے علاوہ ان کی حکومت کے وزراء ، کانگریس کے ممبران اسمبلی ، کارکن اور کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کے مختلف یونٹ شریک ہیں،تاہم ہفتہ کے روز کانگریس کے حلیف ڈی ایم کے کی عدم موجودگی بھی بحث کا موضوع رہی۔ سی پی آئی کی تمل ناڈو یونٹ کے سکریٹری متھارسن نے دھرنے پر بیٹھے لوگوں سے خطاب کیا اور لیفٹیننٹ گورنر کے غیر جمہوری عمل پر تنقید کی۔متھارسن نے کہا کہ اگر وزیر اعظم نریندر مودی جمہوریت اور لوگوں کی فلاح و بہبود پر یقین رکھتے ہیں تو انہیں مداخلت کرکے بیدی کو ہٹانا چاہئے۔انہوں نے مرکزی حکومت پر دہلی سرحدوں پر احتجاج کرنے والے کسانوں کے احتجاج کو ختم کرنے کیلئے فاشسٹ اور خودمختار رویہ اپنانے کا الزام عائد کیا۔وزیر اعلیٰ وی نارائن سامی نے الزام لگایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی اور بیدی نے تمل ناڈو کو شامل کرکے پانڈیچری کی الگ حیثیت ختم کرنے کی سازش کی ہے۔ انہوں نے وزیر اعظم اور بیدی پر یہ الزام بھی لگایا کہ وہ پانڈیچری کے عوام کو ان کے حقوق سے محروم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

You might also like