Baseerat Online News Portal

بھاجپا لیڈررام ولاس ویدانتی کامتنازع بیان

منتخب ایم ایل اے اوردبنگ لیڈر مختار انصاری کوبتایا دہشت گرد، کہا کانگریس کھلارہی ہے بریانی
ایودھیا، 11 جنوری (بی این ایس )
بی جے پی کے سابق ممبر پارلیمنٹ اور رام جنم بھومی نیاس کے سینئر ممبر ڈاکٹر رام ولاس داس ویدانتی نے مختار انصاری کولے کر احمقانہ بیان دیا ہے۔ رام ولاس داس ویدانتی نے مختار انصاری کو پنجاب جیل سے اترپردیش پولیس کے حوالے نہ کرنے پر کہا کہ کانگریس کی حکومت ہمیشہ دہشت گردوں کے ساتھ دوستی رہی ہے۔ دہشت گردوں کا تحفظ اس کا پرانا طریقہ رہا ہے۔ رام ولاس ویدانتی نے کہا ہے کہ مختار انصاری پرانے دہشت گرد تھے، جو نیتانند رائے کے قتل میں ملوث تھے، یہ توبات تومکمل طورپرعیاں ہے۔ اس کے باوجود پنجاب حکومت اپنا کام کررہی ہے۔ کانگریس نے دہشت گردوں کو بچانے کی پوری کوشش کی ہے۔ پنجاب میں جیل میں بند مختار انصاری کے بارے میں رام ولاس ویدانتی نے کہا کہ دہشت گرد مختار انصاری کو بچانے کے لئے کانگریس جان بوجھ کر اسے اترپردیش پولیس کے حوالے نہیں کرنا چاہتی ہے۔ اترپردیش میں دہشت گردوں کی کوئی جگہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس میں دہشت گردی کے خاتمے کی پالیسی پنڈت جواہر لال نہرو کے زمانے سے چل رہی ہے۔ اندرا گاندھی نے اسی پالیسی پر عمل کیا اور اب کانگریس بھی اسی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔
ویدانتی نے کہا کہ سونیا گاندھی، راہل گاندھی، پرینکا گاندھی اور پی چدمبرم کے کہنے پر دہشت گردوں کوراحت دینے کی پالیسی چل رہی ہے۔ پنجاب، چھتیس گڑھ اور جہاں بھی کانگریس کی حکومت ہے، وہاں دہشت گردوں کا تحفظ کیا جارہا ہے۔ بھارتیہ جنتا پارٹی مودی جی اور یوگی جی نے دہشت گردوں کے خاتمے کے لئے جو عہد لیا تھا اسے پورا کرنے کے لئے پرعزم ہیں، ہم اس عزم کو پورا کرنا چاہتے ہیں جو مودی جی نے 2014 میں دہشت گردی سے پاک، بدعنوانی سے پاک ہندوستان، کانگریس سے پاک ہندوستان بنانے کے لئے لیا تھا۔ دہشت گردوں کو بچانے کے لئے کانگریس اپنی ریاستوں کی جیلوں میں دہشت گردوں کو بریانی کھلا رہی ہے۔

You might also like