Baseerat Online News Portal

سیاسی پارٹیوں کے داخلی انتخابات سے متعلق مفاد عامہ کی عرضی کو نمائندگی کے طورپرلیاجائے:ہائی کورٹ

نئی دہلی، 12 جنوری (بی این ایس )
دہلی ہائی کورٹ نے منگل کے روز سیاسی جماعتوں کے داخلی انتخابات کے لئے الیکشن کمیشن آف انڈیا (ای سی آئی) کو ایک مثالی طریقہ کار بنانے اور ملک میں تمام جماعتوں کے آئین میں اس عمل کو شامل کرنے سے متعلق پی ایل آئی کو بطور نمائندہ قبول کرنے کو کہا۔ چیف جسٹس ڈی این پٹیل اور جسٹس جیوتی سنگھ پر مشتمل بنچ نے کمیشن کو معاملے کے حقائق پر لاگو قانون، قواعد، ریگولیٹرز اور حکومتی پالیسی کے مطابق رپورٹ پر فیصلہ کرنے کی ہدایت دی۔ اس ہدایت کے ساتھ ہی بنچ نے وکیل سی راجشیکرن کی درخواست کا نمٹا رہ کردیا۔ راج شیکرن کمل ہاسن کی سیاسی جماعت مکل ندھی مییم (ایم این ایم) کے بانی رکن بھی رہ چکے ہیں۔ راجیشیکرن کی جانب سے پیش ہوئے ایڈوکیٹ ابیمانیو تیواری نے دعوی کیا کہ سیاسی جماعتوں کے داخلی انتخابات میں کمیشن کے ریگولیٹری انسپکٹر کی کمی ہے۔ درخواست میں دعوی کیا گیا ہے کہ کمیشن نے 1996 میں تمام تسلیم شدہ قومی اور ریاستی سطح کی سیاسی جماعتوں اور غیر تسلیم شدہ رجسٹرڈ پارٹیوں کو ایک خط جاری کیا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ وہ تنظیمی انتخابات سے متعلق مختلف دفعات کی تعمیل نہیں کر رہے ہیں۔اس خط کے ذریعے ان سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ مذکورہ انتخابات سے متعلق اپنے اپنے حلقوں میں عمل کریں۔

You might also like