Baseerat Online News Portal

مدھوبنی میں گونگی بہری لڑکی کے ساتھ اجتماعی عصمت دری

انسانیت کی ساری حدیں پار،درندوں نے دونوں آنکھیں پھوڑڈالی
مدھوبنی:۱۲؍جنوری(بی این ایس) مدھوبنی ضلع کے ہرلاکھی تھانہ علاقے میں کوواہی برہی گائوں میں دردنوں نے ایک گونگی بہری لڑکی کے ساتھ اجتماعی عصمت دری کرنے کے بعد حیوانیت کی ساری حدیں پار کرتے ہوئے اس کی دونوں آنکھیں پھوڑ دی ہیں۔ یہ واقعہ منگل کی دوپہر کا ہے، متاثرہ لڑکی کی عمر تقریباً ۱۵؍سال بتائی جارہی ہے۔ وہ نہ بول سکتی ہے اور نہ ہی سن سکتی ہے مکمل گونگی بہری ہے صرف وہ آنکھوں سے ہی مجرمین کو پہچان سکتی تھی شاید اسی وجہ سے ان درندوں نے اس کی دونوں آنکھیں پھوڑ دی ۔ بتایا جارہا ہے کہ سبھی مجرمین گائوں کے ہی ہیں، بہرحال پولس ان درندوں کی گرفتاری کےلیے گائوں میں چھاپے ماری کررہی ہے، گائوں اور پنچایت کے مکھیا رام اقبال منڈل نے بذریعہ فون کال اطلاع دیتے ہوئے بتایاکہ معذور وکمسن لڑکی گھر سے باہر گائوں کے کھیت میں بکری چرانے گئی تھی، اس کے سا تھ گائوں کے اور بھی بچے گئے ہوئے تھے، تقریباً ڈھائی بجے وہاں سے آکر ایک بچے نے واردات کی اطلاع متاثرہ کے اہل خانہ کو دی، اہل خانہ اسے ڈھونڈتے ہوئے گائوں سے کچھ دور دوسرے گائوں موہن پور کے کھیتوں میں پہنچے تو متاثرہ کو بے ہوشی کی حالت میں پایا، اہل خانہ نے زخمی حالت میں متاثرہ کو ام گائوں سی ایچ سی میں داخل کرایا جہاں لڑکی کی نازک حالت کو دیکھتے ہوئے اسے مدھوبنی شہر ریفر کردیا۔ متاثرہ کے اہل خانہ نے بتایاکہ لڑکی کے کپڑے پھٹے ہوئے تھے، عضو نازک سے خون رس رہا تھا، جس سے واضح ہوتا ہے کہ اس کی عصمت دری کرنے کے بعد شناخت نہ ہو اس لیے ان درندوں نے ہماری بچی کی آنکھیں پھوڑ دیں۔ سی ایچ سی کے ڈاکٹروں نے بتایاکہ لڑکی کے آنکھ میں کوئی نوکیلی چیز ڈالی گئی ہے، ایک آنکھ تو مکمل طور پر پھوٹی ہوئی ہے جس سے پھوٹی آنکھ باہر بہہ رہی تھی، دوسری آنکھ بھی پھوٹی ہوئی ہے ۔ بہتر علاج کےلیے اسے مدھوبنی ریفر کردیاگیا ہے۔ ہرلاکھی تھانہ کے تھانہ انچارج پریم لال پاسوان نے بتایاکہ متاثرہ کے اہل خانہ کا بیان نہیں ملا ہے، متاثرہ کو جہاں ریفر کیاگیا ہے وہاں سے بیان آنے کے بعد کارروائی کی جائے گی۔ ابھی ملزمین کی شناخت کے لیے کوشش کی جارہی ہے جس کےلیے چھاپہ مار کارروائی شروع ہوگئی ہے۔ بینی پٹی سرکل انسپکٹر نے بھی یہ بتایاکہ بیان آنے کے بعد سبھی چیزوں پر تحقیقات کرکے منصفانہ کارروائی کی جائے گی۔

You might also like