Baseerat Online News Portal

ڈبلیوایچ او بار بار غلط نقشہ دکھا رہا ہے، ہندوستان نے تیسری باردی وارننگ، فورادرست کرنے کی اپیل

نئی دہلی،14جنوری(بی این ایس )
ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے نقشے نے ہندوستان کی سرحدوں کو غلط انداز میں پیش کیا ہے۔ ہندوستان نے ڈبلیو ایچ او کے چیف ٹیڈروز ایڈہانم کو خط لکھا ہے، جس میں اس پر سخت اعتراضات کا اظہار کیا ہے۔ ہندوستان ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق خط میں کہا گیا ہے کہ غلط نقشہ کو فوری طور پر درست کیا جانا چاہئے۔ ڈبلیو ایچ او کی جانب سے گذشتہ ایک ماہ میں اس مسئلے پر یہ ہندوستان کی طرف سے لکھا گیا یہ تیسرا خط ہے۔ اس سے قبل ڈبلیو ایچ او چیف کو دسمبر میں دو بار خط لکھا جا چکا ہے۔ گذشتہ ہفتے اقوام متحدہ میں ہندوستان کے مستقل نمائندے اندرا مانی پانڈے نے ڈبلیو ایچ او چیف کو اس بارے میں آگاہ کیا تھا۔ہندوستان نے واضح کیا ہے کہ ڈبلیو ایچ او پورٹلز پر ویڈیوز اور نقشے اپنی حدود کو ٹھیک سے نہیں دکھا رہے ہیں۔ ایچ ٹی کے مطابق، 8 جنوری کو ڈبلیو ایچ او چیف کو لکھے گئے خط میں پانڈے نے لکھاکہ میں ڈبلیو ایچ او کے مختلف ویب پورٹلز پر نقشوں میں ہندوستان کی سرحدوں کے غلط دکھانے پر اپنی ناراضگی کا اظہار کرتا ہوں۔ڈبلیو ایچ او کے نقشے میں جموں و کشمیر اور لداخ کو باقی ہندوستان سے الگ شیڈمیں دکھایاگیاہے۔ اس کے علاوہ 5168 مربع کلومیٹر پر پھیلی وادی شکسگام، جسے پاکستان نے 1963 میں غیر قانونی طور پر چین کے حوالے کیا تھا، اسے چین کا حصہ دکھایا گیا ہے۔ چین نے سن 1954 میں جس اکسائی چن خطے پر قبضہ کیا تھا، اسے نیلی پٹیوں میں دکھایا گیا ہے۔ ڈبلیو ایچ او چینی خطے کو اسی طرح کے رنگ میں دکھاتا ہے۔

You might also like