Baseerat Online News Portal

مصرکادلچسپ واقعہ:ایک خاتون عہدیدارنے شہرکی سڑکوں کواپنے شوہراوررشتہ داروں کے نام منسوب کردیا

آن لائن نیوزڈیسک
دنیا بھر میں شہروں اور قصبوں میں شاہراہوں کا نام اہم شخصیات یا تاریخی حوالے سے رکھے جاتے ہیں۔ اسی حوالے سے عرب ممالک میں بھی یہی دستور برسوں سے چلا آرہا ہے۔
سعودی عرب میں بھی شاہراہوں کے نام مختلف اہم مقامی اور عالمی شخصیات کے ناموں پر رکھا کھے جاتے ہیں۔
شاہراہوں کے اصل نام جو سرکاری سطح پر دستاویزات میں ہوتے ہیں کےعلاوہ بعض مقامات کے نام اہل علاقہ کی جانب دیے جاتے ہیں جو اگرچہ سرکاری دستاویزات میں تو نہیں ہوتے مگر وہ نام ہر کسی کی زبان پر عام ہو جاتے ہیں۔
مصر میں ان دنوں شاہراہوں کے نام کے حوالے سے عجیب و غریب موقف اس وقت سامنے آیا جب سوشل میڈیا پر ایک سرکاری خاتون افسر کی جانب سے اپنے منصب کا غلط استعمال کرتے ہوئے شہر میں شاہراہوں کا نام تبدیل کرتے ہوئے شوہر اور ان کے رشتہ داروں کے ناموں پر رکھنے کا حکم جاری کیا گیا۔
مصری جریدے کے مطابق ’القلیوبیہ‘ کمشنری میں صورتحال اس وقت انتہائی دلچسپ ہو گئی جب سوشل میڈیا پر ہونے والی بحث مصری اعلی حکام تک پہنچی۔
عوام کا کہنا تھا کہ خاتون اعلی عہدیدار کو یہ حق نہیں کہ وہ محض اپنے خاندان کے افراد کے ناموں پر شاہراہوں کا نام رکھیں جبکہ خاتون کے شوہر یا ان کے رشتہ دار اس لائق بھی نہیں کہ انہیں قومی ہیرو یا اہم شخصیات کے زمرے میں شامل کیا جائے۔سوشل میڈیا پر عوامی رد عمل کے بعد مصری حکام نے واقعے کی تحقیقات کا حکم صادر کردیا۔
قلیوبیہ کمشنری کے شہر ’کفرشکر‘ کے پولیس کمشنرکی جانب سے فوری طور پرتحقیقاتی کمیٹی کے قیام کا اعلان کیا گیا جنہوں نے خاتون عہدیدار کے احکامات کو منسوخ کرتے ہوئے تحقیقات شروع کردی ہے۔
واقعے کے حوالے سے سوشل میڈیا پر کہا جارہا تھا کہ شاہراہوں کا نام رکھنے کےلیے یہ طے پایا تھا کہ علاقے کے سب سے قدیم اور اہم اشخاص کے نام رکھے جائیں گے جبکہ خاتون عہدیدار نے مقررہ قواعد کی صریح خلاف ورزی کرتے ہوئے اپنے شوہر اور ان کے اہل خانہ کے ناموں پر شاہراہوں کے نام رکھے جانے کی منظوری دی جو قانونی طور پر انتہائی غلط اقدام ہے۔
سوشل میڈیا پر ذاتی تشہیر کے خلاف اٹھنے والی تحریک نے خاتون عہدیدار کے منصوبے پورے نہیں ہونے دیے جو محض پورے شہر کی اہم شاہراہیں اپنے شوہر اور ان کے خاندان کے ناموں سے منسوب کرنے کی خواہاں تھیں۔

You might also like