Baseerat Online News Portal

شبنم کی پھانسی ایک بار پھر ٹل گئی 

 

امروہہ۔ ۲۳؍فروری/بی این ایس

اترپردیش کے امروہہ میں باون کھیڑی قتل معاملے کی قصوروار شبنم کی پھانسی ایک بار پھر ٹل گئی ہے۔ امروہہ میں ضلع عدالت نے استغاثہ سے قاتل شبنم کی تفصیل طلب کی تھی، لیکن شبنم کے وکیل کی طرف سے گورنر کو دی گئی عرضی داخل کردی گئی ہے۔ پھر سے رحم کی درخواست داخل ہونے کے سبب پھانسی کی تاریخ مقرر نہیں ہوسکی ہے۔واضح رہے کہ شبنم کی پھانسی کو لے کر منگل کو ضلع جج کی عدالت میں سماعت ہوئی۔ پہلے ہی مانا جارہا تھا کہ ضلع جج کی عدالت میں شبنم کی رپورٹ سونپی جائے گی اور اگر اس رپورٹ میں کوئی عرضی زیر التوا نہیں پائی گئی تو شبنم کی پھانسی کی تاریخ طے کی جاسکتی ہے۔ لیکن شبنم کے وکیل نے کچھ دن پہلے ہی پھر سے رحم کی درخواست کے لئے گورنر سے گہار لگاتے ہوئے ضلع جیل رام پور انتظامیہ کو رحم کی درخواست سونپی تھی۔ آج سماعت میں اسی کا ذکر آیا، جس کے سبب پھانسی کی تاریخ مقرر نہیں ہوسکی۔واضح رہے کہ 14/15 اپریل 2008 کی درمیانی شب کو شبنم نے اپنے عاشق سلیم کے ساتھ مل کر اپنی ہی فیملی کے 7 لوگوںکو کلہاڑی سے سے کاٹ کر قتل کردیا تھا۔ اس معاملے میں نچلی عدالت سے لے کر سپریم کورٹ تک نے دونوں کی پھانسی کی سزا برقرار رکھی تھی۔ دسمبر 2020 میں سپریم کورٹ نے اس کی ازسر نو داخل کی گئی عرضی بھی خارج کردی تھی۔ اس کے بعد صدر جمہوریہ نے بھی شبنم کی رحم کی درخواست کو خارج کردیا۔ حالانکہ، نینی جیل میں بند سلیم کی رحم کی درخواست پر ابھی فیصلہ ہونا ہے۔

You might also like