Baseerat Online News Portal

رام مندر کے نام پر چندہ نہ دینے والوں کو دی جا رہی ہیں دھمکیاں: نانا پٹولے کا الزام

ممبئی، 4 مارچ (بی این ایس )
رام مندر کے نام پر چندہ نہ دینے والوں کو دھمکیاں دیے جانے کا الزام لگاتے ہوئے ریاستی کانگریس پارٹی کے صدر نانا پٹولے نے حزب اختلاف جماعت بی جے پی سے سوال کیا کہ رام مندر کے نام پر پیسے کیوں جمع کئے جا رہے ہیں؟۔ آج جمعرات کو مہاراشٹرا قانون ساز اسمبلی میں اس مسئلہ کو اٹھائے جانے پر شور اور ہنگامہ کے مناظر دیکھنے میں آئے۔ کانگریس لیڈر نانا پٹولے نے مختلف محکموں کے بجٹ کے مطالبات پر بحث کے دوران رام مندر کی تعمیر کے لئے فنڈ جمع کرنے کے معاملات پر بی جے پی پرتنقید کرتے ہوئے کہا کہ ”کیا چیریٹی ایکٹ رقم کا مطالبہ کرنے کا اختیار اور اجازت دیتا ہے؟۔شور اور ہنگامہ کے دوران اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر نرہری زروال نے ایوان کو 10 منٹ کے لئے اس وقت ملتوی کردیا جب دونوں فریقین کے ممبران ایک دوسرے کے خلاف الزامات اور نعرے لگاتے ہوئے چئیر کے پاس پہنچ گئے۔اپنی تقریر کے دوران، نانا پٹولے نے نے دعوی کیا کہ رام مندر کی تعمیر کے لئے پیسے نہیں دینے والوں کو دھمکیاں دی جارہی ہیں۔ جس پرقائد حزب اختلاف دیویندر فرنویس نے اس پر اعتراض کیا اور کہا کہ ایوان میں رام مندر پر بحث کی جائے۔حزب اختلاف کے ارکان نے اسپیکر کا خالی عہدہ کے مسئلے کو اٹھایا، واضح رہے کہ نانا پٹولے کے کانگریس کی ریاستی یونٹ کے سربراہ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد استعفیٰ دینے سے 4 فروری کو یہ عہدہ خالی ہے۔
ایوان میں تقریر کرتے ہوئے، بی جے پی کے رہنما سدھیر منگینٹیور نے مطالبہ کیا کہ چیئر جلد سے جلد اسپیکر کے انتخاب کے شیڈول کا اعلان کرے، کیونکہ 30 دن کی تاخیر آئین کی تضحیک کے مترادف ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس معاملے میں وزیر اعلی کی صوابدید کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ انھوں نے کہا کہ کیا آپ تاریخ بنانا چاہتے ہیں؟ اور کیا گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں نام درج کرونا چاہتے ہیں؟۔اس موقع پر منگینٹیور نے یاد دلایا کہ اندرا گاندھی نے 17 فروری 1980 کو شرد پوار کی زیر قیادت مہاراشٹرا حکومت کو اس بنیاد پر برخاست کردیا تھا کہ وہاں کوئی آئینی مشینری موجود نہیں ہے۔ بی جے پی رہنما نے کہا کہ انتخابی نظام الاوقات (اسپیکر کے عہدے کے لئے) کا فوری طور پر اعلان کرنا ہوگا بصورت دیگر یہاں صدر کا راج ہوگا۔

You might also like