Baseerat Online News Portal

مونگیر :40 گھنٹوں کے بعد بھی خوف کا تسلط

ٹرپل قتل کے3 ایف آئی آر میں 30 نامزد ، 2 گرفتار
مونگیر ؍پٹنہ ، ۷؍مارچ ( بی این ایس )
بہار کے مونگیر ضلع شہر کے قاسم بازارکے گروہی تنازع میں تین افراد کی ہلاکت کے 40 گھنٹے بعد بھی خوف و ہراس کا ماحول ہے۔ علاقہ مکینوں کے چہروں پر خوف صاف محسوس کیا جاسکتا ہے۔ دوسری طرف ، جے سیارام ساہ کا گھر خالی ہے۔ گھر میں کوئی ممبر نہیں ہیں۔ جے سیارام ساہ اور ان کے بیٹے کندن ساہ کے قتل کے بعد خاندان کے تمام افراد اپنے دوسرے رشتہ داروں میں منتقل ہوگئے ہیں۔ مہلوک کی بیٹی نے بتایا کہ اس کے والد اور بھائی کا قاتل اس کے گھر پر پھر حملہ کرسکتا ہے۔ گھر میں کوئی نہیں ہے ۔ خواتین نے پولیس سے اپیل کی ہے کہ گھر کی خواتین سمیت تمام افراد کو بحفاظت گھر پہنچایا جائے۔خیال رہے کہ اس پورے معاملے میں اب تک 2 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے ، جبکہ 30 افراد کو 3 مختلف ایف آئی آر میں نامزد کیا گیا ہے۔اس قتل کے سلسلے میں پہلا ایف آئی آر جے رام ساہ کی بیٹی پرینکا نے درج کرایا ہے۔ اس میں 17 افراد کو نامزد کیا گیا ہے۔ اس میں کن لوگون کے نام ہیں ، پولیس اس کا انکشاف نہیں کررہی ہے۔ دوسرا ایف آئی آر پرمیشور مہتو عرف راون کے بیٹے رنجیت مہتو نے کی ہے۔ اس نے 9 افراد اور 10 سے 12 نامعلوم افراد کو نامزد کیا ہے۔ تیسری ایف آئی آر پولیس نے کروائی ہے۔ اس میں پرمیشور مہتو اور 100 سے زیادہ نامعلوم افراد کے ہمراہ تشدد میں ملوث 4 افراد کے نام شامل ہیں۔ پولیس کی جانب سے تھانہ قاسم پور کے ایس آئی راجیش کمار نے یہ ایف آئی آر درج کرایا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ پتھراؤ کے دوران کچھ پولیس اہلکار زخمی ہوئے تھے۔فائرنگ ، قتل اور پتھراؤ کے معاملے میں اب تک صرف دو افراد کو ہی گرفتار کیا گیا ہے۔

You might also like