Baseerat Online News Portal

اگر ہم تمام ہندوئوں کو متحد ہونے کو کہتے تو الیکشن کمیشن نوٹس تھما دیتا بنگال کی ریلی میں مودی کا انتخابی کارڈ، مسلم ووٹ بینک کے نام پر حملہ

کوچ وہار۔۶؍اپریل: وزیر اعظم نریندر مودی نے منگل کے روزمغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بنرجی پر حملہ کرتے ہوئے دعویٰ کیاہے کہ مسلم ووٹ بکھرنا نہیں چاہیے۔ ان کی اتحاد کی اپیل سے یہ واضح ہوجاتا ہے کہ ترنمول کانگریس جنگ ہار گئی ہے ۔کوچ وہارمیں ایک انتخابی ریلی سے بالواسطہ طورپرمبینہ طورپرہندوکارڈکھیلتے ہوئے وزیر اعظم نے دعویٰ کیاہے کہ اگر انہوں نے اسی طرح تمام ہندوؤں سے اتحاد اور بی جے پی کو ووٹ دینے کی اپیل کی ہوتی تو انہیں الیکشن کمیشن سے آٹھ دس نوٹس مل جاتے اور ملک بھر کے سیکولرہنگامہ کردیتے۔اسی طرح یوگی کھل کرمذہب کے نام پرووٹ مانگتے رہے ہیں۔ان کے اس بیان کومذہبی بنیادپرباوالواسطہ طورپرووٹ مانگناسمجھاجارہاہے۔انہوں نے کہاہے کہ اس طرح کی اپیل کرتے ہوئے ممتا بنرجی نے ایک گول کیا ہے اور اسی کے ساتھ ہی یہ بھی مان لیا ہے کہ وہ الیکشن ہار گئی ہیں۔ مغربی بنگال میں ہر انتخابی ریلی میں ممتا بنرجی کو دیدی کے نام سے خطاب کرنے والے مودی نے یہاں اپنی حکمت عملی تبدیل کی ۔انھو ںنے کہاہے کہ بہن ، ابھی حال ہی میں آپ نے کہا تھا کہ تمام مسلمان متحد ہوجائیں ، ووٹ کو تقسیم نہ ہونے دیں۔ آپ کہہ رہی ہیں کہ اس کا مطلب ہے کہ آپ کو یقین ہے کہ مسلم ووٹ بینک آپ کو اپنی سب سے بڑی طاقت دے گا۔ یقین کرو ، وہ بھی آپ کے ہاتھ سے نکل گیا ہے۔ مسلمان بھی آپ سے منہ موڑ چکے ہیں۔ آپ کو عوامی طور پر کہنا پڑتا ہے ، اس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ آپ یہ جنگ ہار گئی ہیں۔انہوں نے کہا ہے کہ لیکن اگر ہم یہ کہتے تھے کہ تمام ہندو متحد ہوجائیں ، بی جے پی کو ووٹ دیں ، تو ہم کونوٹس مل جاتے۔ ملک بھر سے سیکولر ہمارے خلاف ہوتے۔

You might also like