Baseerat Online News Portal

تنظیم ائمہ مساجد کے زیراہتمام تعزیتی اجلاس کاانعقاد سہرسہ کی سرکردہ شخصیات نے امیرشریعت مرحوم کو خراج عقیدت پیش کیا

سہرسہ(جعفرامام قاسمی)

ملت اسلامیہ کے عظیم رہنما امیر شریعت مولانا ولی رحمانی کے سانحہ ارتحال پرتنظیم ائمہ مساجد سہرسہ کے زیراہتمام سمری بختیارپورسب ڈویژن کے رانی باغ کی جامع مسجد میں تعزیتی اجلاس کاانعقاد کیاگیا،مولانا مظاہرالحق قاسمی جنرل سیکرٹری تنظیم ائمہ مساجد کی صدارت اور مولانا ضیاء الدین ندوی کی نظامت میں منعقد اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مولانا سیف الرحمن ندوی استاد جامعہ رحمانی خانقاہ مونگیر نے کہا کہ محسن ملت مولاناولی رحمانی کی رحلت سے دل ودماغ حزن وملال سے اس طرح دوچار ہے کہ نہ زبان بولنے پرقادرہے اورنہ قلم ہی حرکت کرپارہاہے،انہوں نے کہاکہ حضرت امیر نے اپنےآخری عمرمیں ہم لوگوں کو نصیحت کرتے ہوئے فرمایاکہ آپ لوگ اگرتین باتوں کو گرہ باندھ لیں تو آپ میں سے ہرایک ملت کاقائد ہوگا،وہ یہ ہے کہ اس ملک کے حالات پر برابر آپ کی نظرہو اور اس کے لیے آپ کو ہمیشہ بیداررہناہوگا،دوسرایہ کہ ہرمسئلے کی بنیاد کو پہلے سمجھیں پھراس کے مطابق لائحہ عمل طے کریں اور تیسری بات یہ کہ ہمت و حوصلے سے آپ کاسینہ ہمیشہ لبریز رہے،کسی سے کبھی مرعوب نہ ہوں ،تنظیم ائمہ مساجد کے صدر حافظ ممتاز رحمانی حضرت امیرشریعت کامختصرسوانحی خاکہ پیش کیا جس سے حضرت کے کردار،سیاسی بصیرت اور بے باکی کا واضح اندازہ ہوا ،وہیں معروف صحافی شاہنواز بدرقاسمی نے اپنے تعزیتی بیان میں کہاکہ حضرت نے اپنی نیابت میں نوجوانوں کی حصہ داری کو یقینی بنانے کاکام کیا،ان کی پوری زندگی نئی نسل کے لیے مشعل راہ ہے،انہوں نے ملکی وریاستی قیادت کے ساتھ عوام سے علاقائی قیادت پربھی اعتماد کرنے کی اپیل کی۔مقامی رکن اسمبلی چودھری یوسف صلاح الدین نے کہاکہ ہمارے پردادانواب نظیرالحسن سے لے کر آج تک رحمانی خانوادے سے ہم لوگوں کا گہراتعلق رہا،آج ان کے انتقال سے ہم لوگ کافی غمگین ہیں،اللہ اس ملک کو ان کا نعم البدل عطاکرے،ان کے علاوہ سمری بختیارپور کے مقامی قاضی شریعت مفتی شاداب اعظم قاسمی ، جمعیۃ علمائے ہند کے ضلع جنرل سکریٹری مولانا انظر قاسمی ،آرجے ڈی کے ضلع صدرپروفیسرطاہرحسن،سمری بختیارپورکے ڈی ایس پی کے والد محترم مطیع الرحمن کشن گنج وغیرہ نے بھی تعزیتی کلمات پیش کیے،اس موقع پرجمعیۃ علمایے ہند کے مرکزی دفتر دہلی کے آرگنائزرمولانا ضیاء اللہ قاسمی،پروفیسرنعمان خان،قاری اختر،مولانا محب اللہ،مولانا رضوان مستقیم،منہاج عالم،فیروزعالم،مولانااطہرندوی،مولانا علاء الدین ندوی،مفتی فیاض عالم، حافظ محمد رضوان عالم، شاہد انور، وجیہ احمد تصور، ابو حذیفہ، مشیر عالم، اشرف علی ندوی، ماسٹر فیروز عالم قاسمی،ماسٹرسلطان عالم سمیت کثیرتعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔

You might also like