Baseerat Online News Portal

اسپتال کی دیوار سے قرآنی آیات ہٹائے جانے پر لوگوں میں غم وغصہ

پاکستان میں دو عیسائی نرسوں کے خلاف توہین رسالت کے الزام میں مقدمہ

لاہور۔۱۱؍اپریل: پاکستان کے صوبہ پنجاب کے ایک اسپتال کے عہدیداروں کی شکایت پر دو عیسائی نرسوں کے خلاف توہین رسالت کے الزام میں مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ پولیس نے یہ اطلاع دی۔ اس دوران لوگوں نے نرسوں کے خلاف احتجاج کیا اور ان کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔ نرسوں پراسپتال کے وارڈ کی دیوار سےقرآنی آیات کے ساتھ لکھا ہوا اسٹیکر ہٹانے کا الزام ہے۔ اس وارڈ میں نفسیاتی مریضوں کا علاج کیا جاتا ہے۔پولیس کے مطابق ، جمعہ کے روز ڈپٹی میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد علی کی شکایت پر فیصل آباد کے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر اسپتال میں کام کرنے والی نرسوں مریم لال اور نیوش اروج کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا۔علی کا دعوی ہے کہ اس کیس کی تحقیقات کرنے والی اسپتال کمیٹی نے دونوں نرسوں کے خلاف توہین رسالت کے الزامات کو ثابت کیا ہے۔ ادھر اسپتال کے عملے نے نرسوں کے خلاف احتجاج کیا اور ان کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔ مقامی مسلم مذہبی رہنما بھی اس احتجاج میں شامل ہوئے۔کچھ مظاہرین نے ان نرسوں میں سے ایک کو اپنے قبضے میں لینے کے لئے اسپتال میں کھڑی پولیس کی گاڑی پر حملہ کیا لیکن پولیس نے نرس کو بھیڑ سے بچانے کے لئے اسے گاڑی کے اندر بند کردیا۔

You might also like