Baseerat Online News Portal

روزہ داروں کوان کی عبادتوں کابدلہ اللہ اپنے ہاتھوں سے دے گا: مولانامحمدانعام اللہ قاسمی

کانپور:۱۵؍اپریل(پریس ریلیز) روزے کی نسبت سے اللہ تعالیٰ کا قانون تمام عبادتوں سے الگ ہے کیوں کہ تمام عبادتوں کا ثواب فرشتوں کے ذریعہ دس سے سات سو گنا تک دلوا یاجائے گا۔ لیکن روزہ ہی ایک ایسی عبادت ہے جس کے بارے میں ارشاد باری تعالیٰ ہے کہ ’روزہ کا بدلہ میں خود دیتا ہوں، فرشتوں کا واستہ نہیں ہوگا۔مذکورہ خیالات کا اظہار محکمہ شرعیہ و دار القضاء کانپور کے قاضی شریعت مولانا محمد انعام اللہ قاسمی نے کرتے ہوئے کہا کہ روزے داروں کیلئے اس سے زیادہ خوشی کی بات اور کیا ہو سکتی ہے کہ وہ اپنی عبادتوں کا بدلہ اپنے مالک کے مبارک ہاتھوں سے پائیں گے، کسی غیر کو دخل تک نہ ہوگا۔
مولانا نے کہا کہ روزے سے اخلاق اور روحانیت کی قوتیں پیدا ہوتی ہیں، دل و دماغ روشن ہو جاتے ہیں، بھوک و پیاس کی تکلیف گناہوں کا کفارہ ہو جاتی ہیں اور انسان ضبط نفس کے اعتبار سے مکمل انسان بن جاتا ہے۔ روزے سے مزاج میں عجز و انکساری آ جاتی ہے۔ بھوک کی مصیبت اور تکلیف کا اندازہ ہوتا ہے اور اس کی وجہ سے بنی نوع، آدم کی مصیبت اور تکلیف کا اندازہ کرکے امداد کا جذبہ پیدا ہوتا ہے۔
مولانا نے بتایا کہ روزے دار ہر وقت اللہ کی عبادت میں شمار ہوتا ہے کیونکہ جب روزے دار کو بھوک لگتی ہے۔ اس کا نفس کھانے و پینے کا تقاضہ کرتا ہے تو اس کا دل برابر شام تک یہی کہتا ہے کہ نہیں ابھی اللہ کی اجازت نہیں۔ اس کا دل ہمت و استقلال کے ساتھ اللہ کی طرف متوجہ رہتا ہے اور دل کا اللہ کی طرف متوجہ ہونا یہی سب عبادتوں کی جان ہے۔

You might also like