Baseerat Online News Portal

رمضان شروع ہوتے ہی فلسطین پر اسرائیل جارحیت  جنگی طیاروں کی غزہ کی پٹی پر دوسری رات بھی بمباری

 

غزہ ۔۱۸؍اپریل/بی این ایس

رمضان شروع ہوتے ہی قابض اسرائیلی فوجیوں کی مظلوم فلسطینیوں پر مظالم کا سلسلہ شروع ہوگیا ہے۔ اطلاعا ت کے مطابق اسرائیلی فوج کے جنگی طیاروں نے کل ہفتے کے روز اور گذشتہ شب کو غزہ کی پٹی پر دوبارہ بمباری کی۔ مقامی نامہ نگار کے مطابق اسرائیلی جنگی طیاروں ‌نے وسطی غزہ میں البریج مہاجر کیمپ کے قریب بمباری کی جب کی جنوبی غزہ میں رفح‌کے مقام پر بھی ایک میزائل داغا گیا۔قابض صہیونی فوج کے جنگی طیاروں نے ہفتے کے روز غزہ میں خان یونس کے مقام پر بھی فلسطینی مزاحمت کاروں کے مراکز پر بمباری کی۔قبل ازیں جمعہ کی شام کو بھی اسرائیلی جنگی طیاروں نے غزہ کی پٹی پر وحشیانہ بمباری کی تھی جس کے نتیجے میں عام شہریوں کی املاک کو نقصان پہنچا تھا۔وہیں یہودی آباد کاروں نے کل ہفتے کے روز غرب اردن کے جنوبی شہر بیت لحم کے نواحی علاقے بیت فجار میں فلسطینیوں کے ایک کھیت میں گھس کر زیتون کے 50 درخت نذرآتش کر دیے۔سماجی کارکن حسن بریجیہ کا کہنا ہے کہ یہودی آباد کاروں نے دیر معلا کے مقام پر فلسطینی شہرہ نسیم طقاطقہ کے فارم میں‌گھس کر وہاں‌پرموجود پچاس پرانے زیتون کے درخت نذر آتش کر دیے۔خیال رہے کہ بیت فجار کی اراضی پر اسرائیلی حکومت نے سنہ 1977ء کو ایک یہودی کالونی بنا رکھی ہے۔سنہ 2019ء کو  دو فلسطنیوں‌ نصیر اور قاسم عصافرہ نے بیت کاحل میںایک فدائی حملے میں مجدال عوز کے قریب ایک اسرائیلی فوجی کو جھنم واصل کر دیا تھا۔ایک اندازے کے مطابق بیت لحم میں ایک لاکھ 65 ہزار یہودی آباد کار آباد ہیں جو شہر کی فلسطینی آبادی کا 20 فی صد ہیں۔

You might also like