Baseerat Online News Portal

اگر کورونا کی تیسری لہر آئی تو دہلی میں آکسیجن کی کمی نہیں ہوگی: سی ایم کیجریوال 

 

نئی دہلی۔۱١؍جون: کورونا مہاماری کا قہر جھیلنے کے بعد دہلی کی اروندکیجریوال حکومت متنبہ ہوگئی ہے۔ کورونا کی تیسری لہر کوقابو کرنے کے لئے دہلی میں پہلے ہی سے تیاریاں زوروں پر ہیں۔ کورونا کی موجودہ لہر میںدہلی کو آکسیجن کے بڑے بحران سے گزرنا پڑا تھا ۔ اس کے پیش نظر دہلی میں آکسیجن ٹینک اور پلانٹ سے متعلق ضروری اقدامات اٹھائے جارہے ہیں۔ان تیاریوں کا جائزہ لینے کے بعدوزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ کورونا کی تیسری لہر میں آکسیجن کی کمی نہ ہونے کو یقینی بنانے کے لئے پوری کوشش کی جارہی ہے۔ اس سلسلے میں دہلی میں 57 ٹن آکسیجن ٹینک تیار کیا گیا ہے۔ یہ ٹینک ڈی ڈی یو اسپتال اور بابا صاحب امبیڈکر اسپتال میں لگائے گئے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی دہلی میں آکسیجن جنریشن پلانٹس بھی تعمیر ہورہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہلی حکومت ایک یا دو دن میں 19 پلانٹوں کا افتتاح کرے گی۔ اس وقت دہلی میں آکسیجن پیدا کرنے اور آکسیجن ذخیرہ کرنے کی صلاحیت پیدا کی جارہی ہے۔ ہم مزید ٹینکر لے کر آرہے ہیں۔ کجریوال نے کہا کہ میراخیال ہے کہ اس وقت ویکسین کی پریشانی بہت زیادہ ہے۔ سب سے بڑا مسئلہ ویکسین کی دستیابی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ اچھی بات ہے کہ 21 جون کے بعد مرکز یہ ویکسین مفت میں دے گا، تاہم انہوں نے یہ کام سپریم کورٹ کے دباؤ میں کیا۔

You might also like