Baseerat Online News Portal

العُلا میں سعودی اور ہالی ووڈ کی فلموں کی عکس بندی کے لیے سمجھوتے

ایک نئی امریکی فلمCherry کی عکس بندی کا کچھ حصہ سعودی عرب کے ضلع العُلا اور دارالحکومت ریاض میں فلمایا گیا۔ یہ مملکت میں ہالی ووڈ کی کسی فلم کی عکس بندی کا پہلا تجربہ تھا۔ العُلا رائل کمیشن کے زیر انتظام “العُلا فلم” مینجمنٹ کی جانب سے العُلا ضلع میں مزید سعودی اور بین الاقوامی فلموں کی عکس بندی کی ترغیب دی جا رہی ہے۔ اس سلسلے میں فلم پروڈکشن کے واسطے مطلوب تمام سہولیات اور لوجسٹک سپورٹ فراہم کرنے کا انتظام کیا گیا ہے۔
سعودی عرب میں سیاحتی ویزوں کے اجرا کے بعد سے سینیما اور ٹی وی پروڈکشن کمپنیوں کی جانب سے مملکت میں عکس بندی کے رجحان میں اضافہ ہوا ہے۔ ان کمپنیوں کی ایک بڑی تعداد نے العُلا اور مملکت کے دیگر کئی علاقوں کا دورہ کیا ہے تا کہ عکس بندی کے لیے مختلف مقامات کو دریافت کیا جا سکے۔ ادھر “العُلا فلم” مینجمنٹ نے انکشاف کیا ہے کہ اس نے ضلع میں دوسری امریکی فلم کی عکس بندی کے سمجھوتے پر دستخط کیے ہیں۔ اس فلم میں ہالی ووڈ کے چوٹی کے اداکار کام کر رہے ہیں۔ علاوہ ازیں دو سعودی فلموں “بين الرمال” اور “نورہ” کی عکس بندی کے لیے بھی سمجھوتے طے پا گئے ہیں۔ العُلا کا تاریخی اور تہذیبی ورثہ انسانی تاریخ میں 2 لاکھ سال پرانا ہے۔ یہ پے در پے تہذیبوں کے 7 ہزار سال پر مشتمل ہے۔ یہ رقبے کے لحاظ سے 22500 کلو میٹر سے زیادہ پر پھیلا ہوا ہے۔ یہاں سحر انگیز وادیاں، ریتیلے پتھر، سیاہ آتش فشاں چٹانیں، سنہری ریت اور چٹانوں پر مشتمل حیرت انگیز وجود واقع ہیں۔ اسی طرح یہاں دیہات، کھیتوں اور قدیم عمارتوں کے ساتھ ہوٹلوں کا انفرا اسٹرکچر بھی ہے جو فلم بنانے والوں کے لیے مختلف نوعیت کے آپشن فراہم کرتا ہے۔ متعلقہ حکام العُلا کو سعودی اور عالمی فلموں کے لیے عکس بندی کا ایک بہترین مقام بنانے کے لیے کوشاں ہیں۔

You might also like