Baseerat Online News Portal

بنگلور میں عرباض کا ناحق قتل اور سنگھیوں کے ہاتھوں مسلم خواتین کے نیلامی کی آن لائن مہم

مکرمی!
بنگلور کے عرباض نامی ایک مسلم نوجوان کو رام سینا نے دردناک طریقے سے اسکے جسم کے ٹکڑے ٹکڑے کر ریلوے پٹری پر پھینک دیا ۔ عرباض کا قصور صرف یہ تھا کہ اسکا تعلق ایک ہندو لڑکی سے تھا، جس کی وجہ سے انتہائی وحشیانہ اور سفاکانہ طریقے سے اسکا قتل کردیاگیا ۔ جبکہ گذشتہ کل ہی کی بات ہے کہ سنگھی ہندو دہشتگردوں نے آن لائن مسلم خواتین کی نیلامی کی خاطر ایک بازار لگایا اور مسلم خواتین کو فروخت کرنے کی ایک بدترین مہم چلائی، اس مہم کا نام سُلّی ڈیل رکھا گیا۔ اس طرح مسلم خواتین کی عزت و آبرو کو نیلام کیا گیا، مسلمانوں کو مشتعل کرنے کی کوشش کی گئی۔ یہ ہم سبھوں کے لیے لمحۂ فکریہ ہے کہ ایک ہی وقت میں ایک طرف مسلم نوجوان کا ایک ہندو لڑکی سے محض دوستی کے تعلقات کی بنا پر خونچکاں حملہ کیا جاتا ہے اور ایک طرف سنگھی درندے مسلم خواتین کی نیلامی کر انکی عزت و عفت کو تار تار کرتے نظر آتے ہیں۔آئے دن اس طرح خونچکاں حملے اور مسلم خواتین کے ساتھ ارتداد کے واردات اخبارات کی سرخیوں میں نظر آتے ہیں کہ کس طرح مسلمانان ہند فسطائی طاقتوں اورانسان نمابھیڑیوں کےظلم کی بھینٹ چڑھ رہے ہیں۔ لیکن مجال ہے کہ انکے خلاف کسی طرح کا ایکشن لیا جائے، یہاں کی حکومت جو ہندو راشٹر بنانے میں ہمہ تن کوشاں ہیں، درندگی کو خوب بڑھاوا دے رہی ہے، انکے پیٹھ تھپ تھپا کر مسلمانوں کے خون ناحق سرزمین ہند پر بہا رہی ہے، ایسے گروہوں کے حوصلے مزید بلند کر رہی ہیں، درندگی اور فتنۂ پروری کے لیے انہیں ابھار رہی ہے۔ایسے میں ہمیں خود اپنی قوم کی حفاظت کے لیے جلد از جلد لائحہ عمل تیار کرنا ہوگا، ہندوستان میں جس رفتار سے مسلمانوں پر جان لیوا حملے ہورہے ہیں ا سے روکنے کی مکمل کوشش کرنی ہوگی، خواب غفلت سے بیدار ہوکر اللہ کی طرف رجوع کرنا ہوگا، اسلامی تعلیمات سے روشناس ہوکر میدانی سرگرمیوںاوراپنے اندر جنگی صلاحیت پیدا کرنی ہوگی۔ ورنہ یہ حالات بد سے بدترین ہوتے چلے جائیں گے، اور ہم بھی ایک دن درندوں کی بھینٹ چڑھ جائیں گے، اسوقت ہماری چیخیں سننے والا کوئی نہ ہوگا۔
عاطف صدیقی

You might also like