جہان بصیرتنوائے خلق

قاضی ریسرچ اینڈ جرنلزم اکیڈمی کام قیام

وقت کی ایک اہم ضرورت کی تکمیل
عمرفاروق قاسمی
بصیرت آن لائن کے چیف ایڈیٹر مولانا غفران ساجد قاسمی، ایڈیٹر مولانا مظفر رحمانی، اور مولانا ارشد فیضی وغیرہ کے ذریعےقاضی ریسرچ اینڈ جرنلزم اکیڈمی کا قیام وقت کی ایک اہم ضرورت کی تکمیل ہے۔ موجودہ حالات میں شعبہ صحافت انسانی زندگی کا ایک لازمی عنصر ہے، آج وہی لوگ ترقی کے بام عروج پر ہیں، ذرائع ابلاغ پر جن کا قبضہ ہے، مٹھی بھر یہودیوں کی پوری دنیا میں اجارہ داری اسی لئے قائم ہے کہ انہوں نے ذرائع ابلاغ پر قبضہ جما رکھا ہے، افسوس ہے کہ مسلمان آج بھی اس شعبے میں صفر کے درجے میں ہیں، مولانا غفران ساجد قاسمی شروع ہی سے صحافت کے میدان میں رہے ہیں، بہار کے مشہور ادارہ مدرسہ چشمہ فیض ململ سے انہوں نے معروف زمانہ مجلہ سہ ماہی ندائے بصیرت کااجراکیااور چیف ایڈیٹر کی حیثیت سے کافی نام کمایا، بلکہ وہ اس کے روح رواں رہے ہیں،میں نے ندائے بصیرت کے ایڈیٹرکی حیثیت سے مولاناکے ساتھ کام کیاہے اوراچھاتجربہ رہا ہے۔ اس کے بعد جب کہ ہم جیسا مولوی آن لائن اخبار کو سمجھتا بھی نہیں تھا بلکہ ہم سے اچھے اچھے بھی اس دنیا سے ناواقف تھے، انہوں نے سعودی عربیہ میں ملازمت کے دوران بصیرت آن لائن شروع کیا جو بہت جلد مقبول ہوا، نئے لکھنے والوں کے لئے یہ اخبار حوصلہ افزائی کا سبب بنا،بلکہ اس سے جڑ کر لوگوں نے کافی نام کمایا، بصیرت آن لائن نے کافی شہرت حاصل کی، سینکڑوں ممالک میں ان کے قاری ہزاروں کی تعداد میں ہیں، مولانا کو میں حرکت کا دوسرا نام دیتا ہوں، صرف استقلال کی ضرورت ہے۔ امید ہے کہ مولانا اور ان کے ہمنوا ساتھیوں کی محنت اور جھد مسلسل سے یہ اکیڈمی بھی کامیابی سے ہمکنار ہوگی، ضرورت ہے کہ صرف اردو تک اس شعبہ کو محدود نہ رکھا جائے، مولانا اچھی انگریزی جانتے ہیں،امید ہے کہ انگریزی اور ہندی تک اس کو پھیلا یا جائے گا، آخر میں مبارک باد پیش کرتا ہوں مولانا کے ساتھ ساتھ پیام انسانیت کے تمام ذمہ داران کو کہ انہیں یہ ضرورت محسوس ہوئی، اللہ عزم و ہمت کو استقلال بخشے۔ آمین

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker