Baseerat Online News Portal

تحقیق ایک آفاقی عمل جو حد بندیوں سے آزاد ہے: پروفیسر عبدالباری پٹنہ یونیورسیٹی کے شعبہ عربی کے زیر اہتمام تحقیق کے عنوان پر توسیعی خطبہ

 

پٹنہ:(پی آر) پٹنہ یونیورسیٹی کے شعبہ عربی کے زیر اہتمام شاہ امین احمدکاظمی توسیعی خطبہ کا انعقاد آج عربی ڈپارٹمنٹ کی کانفرنس ہال میں ہوا۔ اس پروگرام کی صدارت عربی ڈپارٹمنٹ کے صدر پروفیسر مسعود احمد کاظمی نے کی اور نظامت کے فرائض سابق صدر شعبہ ڈاکٹر سرور عالم ندوی نے انجام دیا۔ پروگرام کا آغاز شعبہ عربی کی طالبہ فوزیہ حسن کی تلاوت قرآن کریم سے ہوا۔ جبکہ نعت نبی کا ہدیہ غلام صابر نے پیش کیا۔ اس موقع پر مہمانوں کی گلدستہ پیش کرکے عزت افزائی کی گئی۔ توسیعی خطبہ دیتے ہوئے علی گڑھ مسلم یونیورسیٹی کے سابق صدر شعبہ عربی جناب پروفیسر عبدالباری نے تحقیق کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ قرآن کریم نے دو لفظ تفکر اور تدبر کا استعمال کیا اور تمام لوگوں سے غور فکر اور تدبر اور تفکر کا مطالبہ کیا ہے۔ تدبر اور تفکر کے مجموعے کا نام ہی تحقیق ہے ریسرچ کا مطلب یہ ہی ہے کہ دنیا میں موجود تمام علوم و معلومات کا اس موضوع سے متعلق احاطہ کیا جائے اور پھر اس کو ترتیب وار انداز میں پیش کیاجائے۔ نیز اس کے تمام حوالے جاتے اور سلسلے میں جو بھی ذرائع اصول علم کے ممکن ہیں اسے بروئے کار لاکر کوئی علمی نظریہ پیش کرنا ہی تحقیق کہلاتاہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تحقیق اور ریسرچ کا عمل ایک مشکل ترین کام ہے۔ جس میں اسکالر نہ صرف یہ کے مطبوعہ کتابوں کی ورق گردانی کرتا ہے بلکہ اس کیلے لازمی ہے کہ مخطوطات تک پہنچے اسے رسم الخط کا علم ہونا چاہئے ۔ وہ ہر بات کو پیش کرنے سے پہلے ہزار بار غوروفکر کرےاور اسے دنیا میں تسلیم شدہ تحقیق اور بحث کی کسوٹی پر پرکھ کر دیکھ لے کہا کہ تحقیق کا عمل محدودعلم و فکر کا عمل نہیں ہے بلکہ یہ ایک آفاقی چیز ہے جو حد بندیوں اور قید و بند کے دائرے سے آزاد ہے۔ اس لئےریسرچ اسکالر کو چاہئے کہ کسی بھی موضوع پر تحقیق سے پہلے وہ اس موضوع کے تمام متعلقات خواہ و ہ مطبوعہ شکل میں ہو یامخطوطہ شکل میں مطالعہ ضروی ہے جسکو ۔ پرکھ کر دیکھے اور پھر ایک نظریہ قائم کرے یہی تحقیقی کام کی دشوار گذار راہ ہے۔ اس موقع پر مولانا مظہر الحق عربی فارسی یونیورسیٹی کے رجسٹرار ڈاکٹر حبیب الرحمن علیگ نے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ اخیر میں پٹنہ یونیورسیٹی کے ڈین آف فیکلٹی جناب اشوک کمارجی نے اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ تحقیق اور ریسرچ کو ہندی میں شودھ کہتے ہیں جس کے معنی خالص کرنا ہے۔ یعنی کسی بھی موضوع سے متعلق تحقیق کا مطلب یہ ہوگا کہ اضافی چیز وں کو ہٹا کر بالکل اسے خالص علمی بنیادوں پر مرتب کرنا ۔ سب سے اخیر میں صدر شعبہ عربی جناب مسعود احمد کاظمی نے اپنے تاثرات کا اظہا ر کیا اور مہمانوں کا شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر پٹنہ یونیورسیٹی کے شعبہ عربی کے طلبہ و طالبات کے علاوہ پٹنہ یونیورسیٹی کے شعبہ اردو کے صدر جناب ڈاکٹرشہاب ظفر اعظمی ،شعبہ فارسی سے جناب ڈاکٹر عابد حسین ، ڈاکٹر صادق حسین، مولانا ابو سفیان ندوی ، مفتی محمد نافع عارفی کے علاوہ مختلف یونیورسیٹیوں کے اساتذہ موجود تھے۔ ۔

You might also like