Baseerat Online News Portal

اکھلیش کاہاتھ مضبوط کرنے کے لئے ساتھ آئے’’آزاد‘‘کہا:’مل کرہرائیں گے بی جے پی کو‘

لکھنؤ(ایجنسی)
اترپردیش اسمبلی انتخابات میں سماج وادی پارٹی پوری طاقت سے مصروف ہے۔ ایس پی کی کوشش ہے کہ زیادہ سے زیادہ پارٹیوں کو ساتھ ملایا جائے اور بی جے پی کو سخت ٹکر دی جائے۔ اس درمیان خبرآ رہی ہے کہ آزاد سماج پارٹی بھی سماج وادی پارٹی کے ساتھ آسکتی ہے۔ بھیم آرمی کےسربراہ چندرشیکھر آزاد جمعہ کو سماج وادی پارٹی کےدفترپہنچے تھے، جہاں ان کی ملاقات ایس پی سربراہ اکھلیش یادوسے ہوئی۔ ایس پی کےساتھ گٹھ بندھن کےسوال پر انہوں نے کہاکہ مل کر بی جے پی کو یوپی میںہرائیں گے۔
’اے بی پی گنگا‘ کی رپورٹ کے مطابق آزاد سماج پارٹی کے قومی صدر چندر شیکھر آزاد نے ایس پی کے ساتھ اتحاد کے سوال پر کہا کہ اتحاد ہوگا اور ہم مل کر بی جے پی کو شکست دیں گے۔ سیٹوں پر کوئی تنازع نہیں ہے، ہمارا مقصد بی جے پی کو ہرانا ہے اور تمام لوگ جمع ہو رہے ہیں۔ ذرائع کے مطابق چندر شیکھر اور ایس پی سربراہ کے درمیان اتحاد کو لے کر کئی دنوں سے بات چیت جاری ہے۔
سماج وادی پارٹی کی قیادت والے اتحاد میں اوم پرکاش راج بھر کی سہیل دیو بھارتیہ سماج پارٹی، راشٹریہ کانگریس پارٹی، جن وادی پارٹی( سوشلسٹ) ،جینت چودھری کی قیادت والی آر ایل ڈی ،اپنا دل ( کمیونسٹ) شیوپال سنگھ یادو کی پرگتی شیل سماج وادی پارٹی (لوہیا) ، مہان دل، ٹی ایم سی بھی شامل ہے۔
دوسری طرف یوگی کابینہ سے استعفیٰ دینے والے سوامی پرساد موریہ آج اپنے حامیوں کے ساتھ سماج وادی پارٹی میں شامل ہوگئے۔ اکھلیش یادو کی موجودگی میں موریہ کے ساتھ کئی ایم ایل اے ایس پی میں شامل ہو گئے۔ دھرم سنگھ سینی، ایم ایل اے بھگوتی ساگر، ایم ایل اے ونے شاکیہ، ایم ایل اے روشن لال ورما، ایم ایل اے مکیش ورما اور ایم ایل اے برجیش کمار پرجاپتی، جنہوں نے سوامی پرساد موریہ کے ساتھ یوگی کابینہ سے استعفیٰ دیا تھا، بھی ایس پی میں شامل ہو گئے۔ اس کے علاوہ بی جے پی کی اتحادی پارٹی اپنا دل سے استعفیٰ دینے والے چودھری امر سنگھ بھی ایس پی میں شامل ہو گئے۔
اس دوران اکھلیش یادو نے سی ایم یوگی پر طنز کرتے ہوئے کہا، ’’مجھے لگتا ہے کہ حکومت کے لوگوں کو پہلے ہی پتہ چل گیا تھا کہ سوامی پرساد موریہ اور دھرم سنگھ سینی کے ساتھ بڑی تعداد میں لوگ آئیں گے، اس لیے ہمارے وزیر اعلیٰ پہلے ہی گورکھپور چلے گئے۔ حالانکہ ان کی 11 مارچ کی کسی نے ٹکٹ بک کر رکھی ہے۔‘‘

You might also like