Baseerat Online News Portal

مایاوتی نے جاری کی امیدواروں کی دوسری فہرست،51امیدواروں میں سے23مسلمان کودیاٹکٹ

لکھنؤ(ایجنسی)
بہوجن سماج پارٹی کی سپریمو مایاوتی نے ان سیٹوں پر امیدوار کھڑے کیے ہیں جہاں اتر پردیش اسمبلی انتخابات 2022 کے دوسرے مرحلے کے تحت انتخابات ہونے والے ہیں۔ کل 55 سیٹوں میں سے 51 سیٹوں پر امیدوار مایاوتی نے بھی میدان میں اتارا ہے۔ خاص بات یہ ہے کہ دوسرے مرحلے میں پہلی فہرست سے زیادہ مسلم امیدواروں کو ٹکٹ دیا گیا ہے۔ مایاوتی نے جن 51 سیٹوں پر امیدواروں کا اعلان کیا ہے ان میں سے 23 مسلم ہیں۔
بی ایس پی نے سہارنپور کی بیہت سیٹ سے رئیس ملک، نکوڑ سے ساحل خان اور گنگوہ سے نعمان مسعود کو ٹکٹ دیا ہے۔ وہیں بجنور کے نجیب آباد سے شاہنواز عالم، بڈھا پور سے محمد غازی، دھام پور سے کمال احمد، چاند پور سے شکیل ہاشمی اور نور پور سے حاجی ضیاء الدین انصاری پر اعتماد کا اظہار کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ مرادآباد کی کانٹھ سیٹ سے آفاق علی خان، ٹھاکردوارہ سے مجاہد علی، مرادآباد دیہات سے عقیل چودھری، مرادآباد نگر سے ارشاد حسین سیفی، کندرکی سے حاجی چاند بابو ملک کو ٹکٹ دیا گیا ہے۔
وہیں سنبھل کے اسمولی سے رفعت اللہ، سنبھل سے شکیل احمد قریشی اور گنور سے فیروز کو ٹکٹ دیا گیا ہے۔ رام پور کی چمراوا سیٹ سے عبدالمصطفیٰ حسین اور رام پور سے صداقت حسین کو ٹکٹ دیا گیا ہے۔ مایاوتی نے امروہہ کی نوگانواں سادات سیٹ سے شاداب خان، امروہہ سے محمد نوید ایاز کو ٹکٹ دیا ہے۔ بدایوں کی سہسوان سے حاجی بٹن مسرت اور شیخوپور سے مسلم خان پر اعتماد کا اظہار کیا ہے۔ مایاوتی نے شاہجہاں پور کی تلہار سیٹ سے نواب فیضان علی خان کو ٹکٹ دیا ہے۔
اس طرح اعلان کردہ 51 سیٹوں میں سے 23 مسلم امیدوار ہیں، یعنی 45 فیصد سے زیادہ۔ آپ کو بتا دیں کہ جب مایاوتی نے پہلی فہرست جاری کی تھی تو انہوں نے 53 میں سے 14 سیٹوں پر مسلم امیدوار کھڑے کیے تھے۔ دوسری فہرست میں اس سے بھی زیادہ مسلم امیدواروں کو میدان میں اتارا گیا ہے۔

You might also like