Baseerat Online News Portal

سی بی آئی نے 100 کروڑ کی وصولی کیس میں مہاراشٹر کے سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ کو حراست میں لیا

ممبئی(ایجنسی) مہاراشٹر کے سابق وزیر داخلہ انیل دیشمکھ کی مشکلیں کم ہونے کا نام نہیں لے رہی ہیں۔ سی بی آئی نے 100 کروڑ کی وصولی کیس میں انل دیشمکھ کو حراست میں لےلیا ہے۔ سی بی آئی کی ٹیم انہیں ریمانڈ کے لیے خصوصی سی بی آئی عدالت میں پیش کرے گی۔ انہیں ممبئی کی آرتھر روڈ جیل سے حراست میں لیا گیا تھا۔ اس سے پہلے دیشمکھ نے خصوصی عدالت کے حکم کو چیلنج کرتے ہوئے بامبے ہائی کورٹ سے رجوع کیا تھا۔
خصوصی عدالت کے فیصلے نے سی بی آئی کو بدعنوانی کے الزامات کی تحقیقات کے سلسلے میں دیشمکھ کو تحویل میں لینے کی اجازت دے دی۔ دیشمکھ نے پیر کو ایڈوکیٹ انیکیت نکم کے ذریعہ داخل کردہ اپنی عرضی میں سی بی آئی کی تحویل کی درخواست کو بھی چیلنج کیا تھا۔
سینئر نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی) لیڈر کی درخواست بدھ کو جسٹس ریوتی موہتے ڈیرے کی سنگل بنچ کے سامنے سماعت کے لیے درج ہے۔
سی بی آئی کی ایک خصوصی عدالت نے 31 مارچ کو سی بی آئی کی طرف سے دائر درخواست کی اجازت دی تھی اور ایجنسی کو دیش مکھ اور تین دیگر – سنجیو پالنڈے، کندن شندے (دیش مکھ کے سابق معاون) اور برطرف پولیس افسر سچن واجے کو حراست میں لینے کی اجازت دی تھی۔

You might also like