Baseerat Online News Portal

یوم فتح: دنیاکوایک نئی عالمی جنگ سے بچنے کی اشدضرورت،صدرپوٹن کاوکٹری ڈے پرخطاب

آن لائن نیوزڈیسک
روسی صدر ولادیمیر پوٹن نے دوسری عالمی جنگ میں نازیوں کے خلاف ریڈ آرمی کی کامیابی کے 77 سال پورے ہونے کے موقع پر منعقدہ فوجی پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے نازی جرمنی کے خلاف ریڈ آرمی کی جنگ کا موازنہ روس کی یوکرین میں عسکری کارروائی سے کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ یوکرین میں روس کی عسکری مہم ممکنہ جارحیت کو کچلنے کا بر وقت اقدام تھا۔
اس موقع پر روسی صدر ولادیمیر پوٹن نے کہا کہ روسی فوجی ملک کی سکیورٹی کی خاطر یوکرین میں لڑ رہے ہیں۔ تقریب میں یوکرینی جنگ میں ہلاک ہونے والے روسی فوجیوں کے اعزاز میں ایک منٹ کی خاموشی بھی اختیار کی گئی۔ پریڈ کے موقع پر روسی صدر نے کہا کہ یوکرین نے نیٹو کے ہتھیاروں کے ذریعے اپنے آپ کو مسلح کر لیا ہے لہٰذا یہ روس کی سلامتی کے لیے خطرہ ہے۔ ماسکو کے ریڈ اسکوائر پر پوٹن نے وہاں موجود ہزاروں فوجیوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یوکرین میں روسی فوجی نازیوں کے خلاف جنگ جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا، ” لیکن یہ انتہائی اہم ہے کہ دنیا کو ایک مرتبہ پھر عالمی جنگ کی تباہ کاریوں سے محفوظ رکھنے کے لیے بہت کچھ کیا جانا چاہیے۔‘‘
فوجیوں سے خطاب کرتے ہوئے روسی صدر نے کہا، ’’آپ اپنی زمین کا دفاع کر ہے ہیں۔ ہر سپاہی اور فوجی کی ہلاکت ہمارے لیے تکلیف دہ ہے۔ ریاست متاثرہ خاندانوں کا ہر ممکن طریقے سے خیال رکھے گی۔‘‘ روسی صدر نے اپنی تقریر کا اختتام ایک زور دار نعرے کے ساتھ کیا۔ ان کا کہنا تھا، ’’ روس کے لیے کامیابی۔‘‘
دوسری جانب یوکرین کے صدر وولوديمير زیلنسکی کا کہنا تھا کہ ان کا ملک روس کو دوسری عالمی جنگ کی کامیابی کا سہرا نہیں لینے دے گا۔ زیلنسکی نے کہا، ’’آج ہم نازیوں کے خلاف کامیابی کا دن منا رہے ہیں۔ ہمیں فخر ہے کہ ہمارے آباؤ اجداد نے دیگر قوموں کے ساتھ مل کر ہٹلر مخالف اتحاد کے ذریعے نازیوں کو شکست دی۔ اور ہم کسی اور کو اس کامیابی کا سہرا لینے کی اجازت نہیں دیں گے۔‘‘ یوکرینی صدر نے یہ بھی کہا کہ یوکرین کے کئی اضلاع اور شہر روسی حملوں کی زد میں ہیں۔ زیلنسکی کا کہنا تھا کہ دوسری عالمی جنگ کے دوران یوکرین نے ان علاقوں سے نازی فوجیوں کا صفایا کر دیا تھا۔

You might also like