Baseerat Online News Portal

متھلا پینٹنگ میں خودروزگار کے بہتر امکانات: دیو یانشو شیکھر

متھلا پینٹنگ کے تربیت یافتگان کے درمیان تقسیم اسناد کے موقع پر مرکز انچارج کا خطاب
جالے(رفیع ساگر؍بی این ایس)مقامی زرعی سائنسی تحقیقاتی مرکز میں متھلا پینٹنگ کے موضوع پر منعقدہ 5 روزہ ٹریننگ جمعہ کو اسناد کی تقسیم کے ساتھ اختتام پذیر ہوئی۔ اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے مرکز کے انچارج ڈاکٹر دیویانشو شیکھر نے کہا کہ متھلا پینٹنگ متھلانچل کا ایک افسانوی فن ہے، جو بعض وجوہات کی وجہ سے اپنی متوقع بلندی پر نہیں پہنچ سکا ہے۔ اس میں متھلا کے نوجوانوں کے لیے خود روزگار کے بے پناہ امکانات ہیں۔ ڈاکٹر دیویانشو نے کہا کہ دیہی نوجوانوں کو تکنیکی معلومات اور تربیت فراہم کرنے کے لیے کرشی وگیان کیندر میں انڈین کونسل آف ایگریکلچرل ریسرچ کی ہدایت پر 5 روزہ ٹریننگ کا انعقاد کیا گیا۔ انہوں نے زیر تربیت لڑکے، لڑکیوں سے درخواست کی کہ ہنر سیکھنے کے بعد اسے اپنے روزگار کے طور پر اپنائیں اس میں کرشی وگیان کیندر مسلسل مطلوبہ تعاون کرنے کے لیے تیار رہے گا۔ انسٹرکٹر منجو مشرا نے اس فن کے مختلف پہلوؤں پر گفتگو کی۔ پروگرام کی نگراں ہوم سائنٹسٹ پوجا کماری نے بتایا کہ اس ٹریننگ میں بہیڑی اور جالے بلاک کے ٹرینیوں نے حصہ لیا۔زرعی سائنسدانوں میں سراج الدین، گوتم کنال، انجلی سدھاکر، ابھیشیک کمار اور ستیش کمار کے ساتھ فارم مینیجر چندن کمار، سنجیو کمار، امرنجے کمار بھی اختتامی سیشن کم انعام تقسیم تقریب میں موجود تھے۔

You might also like