Baseerat Online News Portal

9 سالہ بچی سے ریپ میں 65 سالہ ٹیوشن ٹیچر کو عمر قید کی سزا، 50 ہزار کا مالی جرمانہ بھی

جالے (رفیع ساگر؍بی این ایس) دربھنگہ میں پاکسو کی ایک خصوصی عدالت نے 65 سالہ ٹیوشن ٹیچر کو 9 سالہ بچی کی عصمت دری کرنے کے جرم میں عمر قید کی سزا سنائی ہے۔ خصوصی جج ونئے شنکر نے ٹیچر پر 50000 روپے کا جرمانہ بھی عائد کیا ہے ۔جرمانے کی یہ رقم متاثرہ کو دی جائے گی۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے ریاستی حکومت کو متاثرہ کو 6 لاکھ روپے معاوضہ ادا کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔
17 جولائی 2018 کو حیاگھاٹ تھانہ کی پولیس نے معاملہ سامنے آنے کے 2 دن بعد ملزم ٹیچر کو گرفتار کرکے عدالتی تحویل میں جیل بھیجا تھا۔اسپیشل پبلک پروسیکیوٹر امر پرکاش کے مطابق مجرم کے خلاف الزامات طے کرنے کے بعدمقدمے کی سماعت 5 نومبر کو شروع ہوئی۔ اس دوران عدالت نے 6 مئی کو مجرم قرار دیا تھا۔
ایف آئی آر کے مطابق 65 سالہ ٹیچر 9 سالہ بچی کو ٹیوشن پڑھانے کے لیے حیا گھاٹ بلاک کے تحت اس کے گھر آتا تھا۔اس دوران اس نے لڑکی کے ساتھ درندگی کی تھی۔ پولیس نے بتایا کہ متاثرہ کے والد حیا گھاٹ مارکیٹ میں ایک چھوٹا کاروبار کرتے ہیں۔
ایف آئی آر کے مطابق ملزم ٹیچر معمول کے مطابق اس روز بھی اس کے گھر کے ایک کمرے میں لڑکی کو ٹیوشن پڑھا رہا تھا۔ کچھ دیر بعد جب کوئی آس پاس نہ تھا تو اس نے لڑکی کا ریپ کیا۔ اسی دوران لڑکی کی چھوٹی بہن نے ٹیچر کو گندی حرکت کرتے ہوئے دیکھ لیا اور اپنی ماں کو بتانے بھاگی۔
متاثرہ لڑکی کی والدہ کمرے کے اندر گئی تو ٹیچر اس کی بیٹی کے ساتھ مارپیت کر رہا تھا۔ اس دوران ملزم ٹیچر موقع سے فرار ہو گیا تھا۔ پولیس نے تحریری شکایت ملنے کے بعد اسے گرفتار کر کے جیل بھیج دیا تھا۔

You might also like