Baseerat Online News Portal

ملک میں نفرت کا ماحول بنائے جانے کے خلاف جمع ہوئے سبھی مذاہب کے رہنما

 

نئی دہلی 23 مئی (پریس ریلیز)

اشتعال انگیزی، مذہبی بھید بھاؤ، فرقہ وارانہ نفرتی ماحول کے خلاف ملک میں امن و سلامتی کے استحکام کیلئے سبھی مذاہب کے رہنما آج دارالحکومت دہلی میں ایک ساتھ بیٹھے۔

ملک کے حالات و اشتعال انگیز بیان بازی، روز روز نیا مسئلہ کھڑا کرنے و مذہبی بھید بھاؤ کو لیکر مذہبی رہنماؤں نے سخت بے چینی و تشویش کا اظہار ہی نہیں کیا بلکہ ہاتھ اٹھاکر نفرت و مذہبی تعصب کے خلاف مل جل کر مقابلہ کرنے کا عہد کیا۔

اس موقع پر کئی اہم تجاویز و قرارداد پیش کی گئیں حاضرین جن میں اکثریت ہندو صاحبان کی تھی نے بھر پور تائید کرتے ہوئے ہر طرح سے ساتھ چلنے و محنت کرنے کا عزم کیا۔

 

تجاویز حسب ذیل ہیں:

ملک کے مختلف علاقوں میں اسی انداز میں سب کے ساتھ بیٹھ کر ملک کو جوڑنے کے لئے بار بار پروگرام کیے جائیں۔

اپنے اپنے مذہب پر عمل کرتے ہوئے ملک کے تحفظ و امن و سلامتی کو ہمیشہ پیش نظر رکھیں۔

 

کسی بھی سماج کو اگر ٹارگیٹ کیا جاتا ہے یا کسی بھی طرح کی تکلیف پہونچائی جاتی ہے تو دوسرے مذاہب و سماج کے لوگ ان کی حمایت میں کھل کر سامنے آئیں گے۔

 

نفرت و تعصب سے ملک کو عوامی و ترقیاتی اعتبار سے کتنا نقصان ہوگا، اس بات سے آگاہ کرنے کے لئے جلد ہی وزیر داخلہ امت شاہ سے ملاقات کی جائےگی۔

 

پروگرام میں شامل ہونے والے آچاریہ لوکیش منی جی، گوسوامی جی، سردار ستنام اپل جی، مولانا جاوید صدیقی قاسمی، سوامی سروپانند جی، انیل جوزف جی، کرنل تیاگی جی، راجیو جولی کھوسلا جی، لامبا جی، بودھ لامہ جی، بہائی رہنما، جین منی جی، روہت شرما جی، گورو شرما جی، مہندرتا جی، آشا جی کے علاوہ سابق جج، سپریم کورٹ و ہائی کورٹ کے ایڈووکیٹ، جرنلسٹ، سماجی شخصیات، مختلف مذاہب کے پیروکار بڑی تعداد میں شامل ہوئے۔

You might also like