ہندوستان

تلنگانہ حکومت نے اکبرالدین اویسی کے خلاف کیس چلانے کی اجازت دیدی

حیدرآباد، ۲۱؍ اپریل (نیوز ۱۸)ساڑھے تین سال پرانے اشتعال انگیز اور نفرت آمیز تقریر کے ایک معاملہ میں ایم آئی ایم کے لیڈر اکبرالدین اویسی کے خلاف کیس چلانے کی تلنگانہ حکومت نے اجازت دے دی ہے۔ اویسی نے 22 دسمبر 2012 کو آندھرا پردیش کے عادل آباد ضلع کے نرمل قصبے میں ایک پروگرام میں ہندوؤں، بی جے پی اور مودی کے خلاف بیان دیا تھا۔اس کے بعد 2 جنوری کو نرمل اور نظام آباد پولیس اسٹیشن میں اویسی کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی۔ تاہم اس کیس میں اب تک چارج شیٹ فائل نہیں ہوئی تھی ، لیکن اب حکومت نے اس معاملے میں اویسی کے خلاف کیس چلانے کی اجازت دے دی ہے۔اویسی کے خلاف نفرت آمیز تقریر کرنے، ملک کے خلاف جنگ چھیڑنے، فساد بھڑکانے کے معاملے میں تعزیرات ہند کی دفعہ 153، 153 اے، 121 اور 295 اے کے تحت مقدمہ درج کیا گیا تھا اور تفتیشی افسر نے حکومت سے اویسی کے خلاف کیس چلانے کی اجازت مانگی تھی ، جس پر اب تلنگانہ حکومت نے پولیس کو اس کیس میں چارج شیٹ دائر کرنے کے لئے اجازت دے دی ہے۔قابل ذکر ہے کہ اکبرالدین اویسی ایم آئی ایم کے رکن اسمبلی ہیں اور اس پارٹی کے صدر اسد الدین اویسی کے بھائی ہے۔ اکبرالدین اویسی اکثر و بیشتر بی جے پی ، آر ایس ایس اور وزیر اعظم مودی پر تیکھے حملے کرتے رہتے ہیں ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker