ہندوستان

تین طلاق کے معاملہ پر فیصلہ کیلئے سپریم کورٹ نے مسلم پرسنل لاء بورڈ کو دیا 6 ہفتے کا وقت

نئی دہلی ۲۲؍اپریل: (پردیش ۱۸) سائرہ بانو کیس میں سپریم کورٹ نے آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کو فیصلہ لینے کے لئے 6 ہفتے کا وقت دیا ہے۔ سائرہ بانو نے خبر ایجنسی اے این آئی سے بات چیت میں انصاف ملنے کی امید ظاہر کی ہے۔ كاشي پور کی رہنے والی سائرہ بانو نے سپریم کورٹ میں تین طلاق، حلالہ اور تعدد ازدواج کو چیلنج کیا ہے۔عرضی میں مسلم پرسنل لاء کے تحت خواتین کے ساتھ صنفی امتیاز، ایک طرفہ طلاق اور بیوی رہتے ہوئے مسلم مردوں کی دوسری شادی کے معاملے پر انصاف کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ بانو نے کہا کہ ہماری شادی 2002 میں ہوئی تھی۔ میرے شوہر نے مجھے تین طلاق اکتوبر 2015 میں دی تھی۔سائرہ نے کہا کہ اس کی وجہ سے مجھے ذہنی اور جسمانی تشدد جھیلنی پڑی اور 6 مرتبہ اسقاط حمل کے لئے بھی مجبور ہونا پڑا ۔ جب مسلم ملک میں یہ نظام ختم ہو گیا ہے ، تو ہندوستان میں بھی ختم ہونا چاہئے۔ بانو نے کہا کہ مجھے ملک کے نظام عدل پر مکمل اعتماد ہے، مجھے انصاف ضرور ملے گا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker