ہندوستان

مرکزعلم ودانش علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی تعلیمی وثقافتی سرگرمیوں کی اہم خبریں

علی گڑھ28؍اپریل:(ایم کے حبیب؍بیوروچیف) علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے ٹریننگ اینڈ پلیسمینٹ آفس کے زیرِ اہتمام انٹر کوالٹی ایشیورینس سیل(آئی کیو اے سی) کے تعاون سے منعقدہ روزگار فیسٹیول ریکروفیسٹ۔16 کی اختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مہمانِ خصوصی پرو وائس چانسلر برگیڈیئر ایس احمد علی(ریٹائرڈ)نے کہا کہ اس قسم کے بڑے پروگراموں کے انعقاد سے طلبأ کو نہ صرف یونیورسٹی میں ہی روزگار کے مواقع مہیا ہوں گے بلکہ ان میں پیشہ ورانہ مثبت ماحول بھی پیدا ہوگا۔
پرو وائس چانسلر نے اس ریکروفیسٹ میںطالبات کی سرگرم حصہ داری پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان کے لئے ہر میدان میں روزگار کے لا محدود مواقع موجود ہیں اور انہیں ان مواقع کا فائدہ اٹھانا چاہئے۔برگیڈیئر علی نے طلبأ سے کہا کہ وہ سرکاری ملازمتوں میں بھی بھرتی کے لئے درخواستیں پیش کریں جہاں استحکام کے ساتھ بڑا مشاہرہ بھی مل رہا ہے۔پرووائس چانسلر نے کہا کہ انہیں اس بات پر فخر ہے کہ اے ایم یو کے طلبأ اپنی مستقبل سازی کے تئیں اس قسم کے مثبت پروگراموں میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہے ہیں۔ انہوں نے ٹی پی او( جنرل) مسٹر سعد حمید کی کاوشوں کو بھی سراہا۔
آئی کیو اے سی کے ڈائرکٹر پروفیسر رضوان خاں نے کہا کہ انہوں نے مسٹر سعد حمید کے ساتھ مل کر یونیورسٹی کے سبھی ہالوں میں جاکر طلبأ کو روزگار کے مواقع کے تعلق سے بیدار کیا اور انہیں اس فیسٹ میں شامل ہونے کے لئے ترغیب دلائی۔انہوں نے کہا کہ طلبأ کو اس ریکروفیسٹ کے انعقاد سے ان کے متعلقہ میدانوں کے بارے میں کافی معلومات حاصل ہوئی ہیں۔
ٹی پی او ( جنرل) مسٹر سعد حمید نے بتایاکہ اس فیسٹ میں ملک کی32 ممتاز کمپنیاں شامل ہوئی ہیں اور مختلف کورسیز کے406طلبأ کو روزگار کے مواقع حاصل ہوئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ اس ریکروفیسٹ کے انعقاد کا مقصد بھی طلبأ کو روزگار اور اس سے متعلق معلومات مہیا کرانا اور کارپوریٹ ورلڈ کو اے ایم یو سے متعارف کرانا تھا۔انہوں نے کہا کہ اس فیسٹ کے انعقاد سے اے ایم یو طلبأ کو روزگار کے مزید مواقع حاصل ہوئے ہیں۔انہوں نے اس عمل میں وائس چانسلر اور پرو وائس چانسلر کے مسلسل تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔انہوں نے بتایا کہ140طالبات کو بھی مختلف کمپنیوں نے جوب آفر دئے ہیں۔
نظامت کے فرائض ریکروفیسٹ کے کنوینر اور بی ٹیک کے طالب علم محمد وسیم اکرم نے انجام دئے جبکہ ایوینٹ مینیجر اشہر رئیس نے حاضرین کا شکریہ ادا کیا۔اختتامی تقریب میں ایم بی اے اور بی اے ایل ایل بی کے طلبأنے اپنے یہاں کے طلبأ کے سو فیصد انتخاب پر مسٹر سعد حمید کو سرفراز کیا۔
٭٭٭٭٭٭
علی گڑھ28؍اپریل: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے شعبۂ سیاسیات کے سینٹر فار نہرو اسٹڈیز کے زیرِ اہتمام’’ موجودہ قومیت کے تعلق سے گفتگو‘‘ موضوع پر منعقدہ خطبہ سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر رمیش دیکشت نے کہا کہ ہندوستانی قومیت در اصل متحدہ قومیت ہے جس میں خواتین، اقلیتوں، دلتوں، پسماندہ طبقات اور سماج کے باقی تمام لوگوں کی شمولیت ہے لیکن موجودہ حکومت جس قومیت کے تصور کو عام کرنا چاہتی ہے اور بھارت ماتا کی جے جیسے نعروں کو تسلیم کرانا چاہتی ہے وہ مصنوعی ہے جس کا ہماری تہذیب اور ثقافت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔
انہوں نے مزید کہا کہ جب ہم قوم پرستی کی بات کرتے ہیں تو ہمیں یہ یاد رکھنا چاہئے کہ اس کو وضح کرنے میں ٹیگور، گاندھی، امبیڈکر اور نہرو وغیرہ کا بہت اہم رول ہے۔ یہ لیڈران اس حد درجہ صاحبِ نظر تھے جنہیں ہندوستانی سماج کی سوجھ بوجھ تھی اور وہ ایسے ہندوستان کا تصور اپنے ذہن میں رکھتے تھے جس کی بنیادیں اتنی مضبوط ہوں کہ وہ سویت یونین یا یوگوسلاویہ کی طرح منتشر نہ ہوجائیں۔ یہی وجہ ہے کہ ان کے قوم پرستی کے تصور میں کافی وسعت ہے جس میں تمام طبقات چاہے ان کا تعلق کسی بھی مذہب سے ہویاوہ کوئی بھی زبان بولتے ہوں سب کے سب شامل ہوجاتے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ موجودہ قوم پرستی جو کہ موجودہ حکومت کی دین ہے وہ اٹلی اور جرمنی کی فسطائی اور نازی قوم پرستی سے مناسبت رکھتی ہے جو ملک کے مستقبل کے لئے کافی خطرناک ہے۔ دوسری جانب یہ قوم پرستی کا بیانیہ عوام کے بنیادی مسائل جن کو حل کرنے میں موجودہ حکومت ناکام رہی ہے، سے عوام کا ذہن ہٹانے اور سرمایہ داروں و کارپوریٹ گھرانوں کے مفادات کو پورا کرنے کے لئے عمل پیرا ہے۔
مسٹر رمیش دیکشت نے کہا کہ ہندوستانی جمہوریت کی جڑیں کافی مضبوط ہیں اور بہت جلد قوم پرستی کا یہ بیانیہ جھاگ کی طرح بیٹھ جائے گا اور متحدہ قومیت کا تصور گاندھی، نہرو، امبیڈکر اور ٹیگور سے مناسبت رکھتا ہوا عام ہوگا۔
اس موقع پر پروفیسر اسمر بیگ، مسٹر وویک بنسل اور پروفیسر محب الحق نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔
٭٭٭٭٭٭
علی گڑھ28؍اپریل: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کے سر ضیاء الدین ہال نے یہ عہد کیا ہے کہ وہ شفاف ہندوستان مہم کو اپناتے ہوئے اپنے ہال کو مکمل طور پر شفاف بنانے کے ساتھ ہال کی خوبصورتی میں اضافہ کرے گا۔
اس تعلق سے سب سے پہلے ہال کے ڈائننگ ہال کی شفافیت اور خوبصورتی کا عمل پورا کیاگیا اور دوسرے میقات کے تحت آج ہال کے سبھی ملازمین، طلبأ، پرووسٹ اور وارڈنس نے مل کر ہال کے احاطے میں صفائی مہم شروع کی۔ سر ضیاء الدین ہال کے طلبأ ،پرووسٹ اور وارڈنس ہال کے قریب سے گزرتے ہوئے نالے، ہال کے میدان اور اندرونی عمارت کی صفائی کر رہے ہیں۔ یہ پروگرام تین روز تک مسلسل جاری رہے گا۔ تزئین کاری کے لئے ہال میں ایک باغیچہ اور کھیل کا میدان بنائے جانے کی کاوشیں جاری ہیں۔ اس تعلق سے ہال کیمپس کے قرب و جوار میں پھل دار پیڑلگائے جانے کا ہدف مقرر کیاگیا ہے۔
اس موقع پر منعقدہ پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے ہال کے پرووسٹ پروفیسر عمران سلیم نے کہا کہ اچھی صحت کے لئے صحت مند ماحولیات کا ہونا بے حد ضروری ہے اور یہ بہتر صفائی سے ہی ممکن ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کی بھرپور کوشش ہے کہ ہال کا ماحول شفاف ہونے کے ساتھ یہاں کے طلبأ کو تمام سہولیات مہیا کرائی جائیں۔
پروگرام کے مہمانِ خصوصی مینیجر لینڈ اینڈ گارڈنس سید محبوب اشرف نے کہا کہ ہال میں پھل دار درختوں کے پودے لگائے جائیں گے جس سے جہاں ایک طرف ماحولیات کو آلودگی سے پاک کرنے میں مدد ملے گی وہیں طلبأ پھلوں سے مستفیض ہوسکیں گے۔ پروگرام سے سینئر ہال محمد عمر فاروق اور ہال کے ملازم ظفر الدین نے بھی خطاب کیا۔اس موقع پر وارڈن ٹیم کے رکن ڈاکٹر محمد شاداب خاں، ڈاکٹر محمد اسلم، محمد اقبال خاں، ڈاکٹر کنور ساجد علی، ڈاکٹر جہاں گیر چوہان اور ڈاکٹر محمد شاکر کے علاوہ بڑی تعداد میں طلبأ اور ہال کے ملازمین موجود تھے۔
٭٭٭٭٭٭
علی گڑھ28؍اپریل: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی گیمس کمیٹی کے ڈپٹی ڈائرکٹر انیس الرحمن خاں کو انڈین یونیورسٹی ہاکی ٹیم ( مرد) کا ٹیم مینیجر مقرر کیاگیا ہے۔
سیفئی اٹاوہ میں کھیلے جا رہے6thسینئر نیشنل ( مرد) ہاکی ٹورنامنٹ میں حصہ لے رہی انڈین یونیورسٹی ہاکی ٹیم نے بہترین کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے سیمی فائنل میں داخلہ حاصل کرلیاہے۔29؍اپریل کو وہ پنجاب کی ٹیم سے کھیلے گی۔ اس ٹورنامنٹ میں ملک کی52ٹیمیں حصہ لے رہی ہیں
٭٭٭٭٭٭
علی گڑھ28؍اپریل: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی گیمس کمیٹی کے ہائیکنگ اینڈ ماؤنٹیرنگ کلب کے زیرِ اہتمام مرد اراکین کے لئے ایڈوینچر ماؤنٹیرنگ کورس کا انعقاد کیا جارہا ہے۔
ہائیکنگ اینڈ ماؤنٹیرنگ کلب کے صدر ڈاکٹر سرور رئیس نے بتایا کہ یہ کورس گزشتہ ماہ کلب کے زیرِ اہتمام منعقدہ رکنیت کیمپ میں منتخب طلبأ کے لئے منعقد کیا جا رہا ہے۔انہوں نے بتایا کہ یہ ہائیکنگ اینڈ ماؤنٹیرنگ کیمپ دہرہ دون اور مسوری علاقے میں لگایا جائے گا۔ ڈاکٹر رئیس نے کہا کہ اس ایڈوینچر کیمپ میں شامل ہونے کے خواہش مند طلبأ یکم مئی تک کلب کے انسٹرکٹر کو رپورٹ کرسکتے ہیں۔
٭٭٭٭٭٭
علی گڑھ28؍اپریل: علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی ایگریکلچرل سائنس فیکلٹی کے ہوم سائنس شعبہ اور آرٹس فیکلٹی کے سنسکرت شعبہ کے طلبأ و طالبات نے نیٹ و جے آر ایف امتحان میں کامیابی حاصل کی ہے۔
ہوم سائنس شعبہ کی سربراہ پروفیسر فرزانہ علیم نے بتایا کہ شعبہ کی ریسرچ ا سکالر نبات عارفی اور ایم ایس سی چہارم سیمسٹر کی طالبہ فرحین جبیں نے نیٹ امتحان میں کامیابی حاصل کی ہے۔
سنسکرت شعبہ کے سربراہ پروفیسر کے بی وائی خاں نے بتایا ہے کہ ایم اے سال آخر کے طالب علم اروند کمار نے جے آر ایف اور ریسرچ اسکالر سپنا یادو نے نیٹ امتحان میں کامیابی حاصل کی ہے۔
پروفیسر فرزانہ علیم اور پروفیسر یوسف نے منتخب طلبأ کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے ان کے روشن مستقبل کی توقع کا اظہار کیا ہے۔
٭٭٭٭٭٭
علی گڑھ28؍اپریل: پروفیسر طارق اسلام علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی آرٹس فیکلٹی کے شعبۂ فلسفہ کے نئے سربراہ مقرر کئے گئے ہیں۔
وائس چانسلر نے پروفیسر طارق اسلام کی شعبہ کے سربراہ کے عہدے پر تقرری کو اپنی منظوری دے دی ہے۔ شعبہ کے سربراہ کے عہدے پر ان کی تقرری فوری طور پر پروفیسر جلال الحق کی جگہ کی گئی ہے۔ان کے اس عہدے کی مدت تین سال ہوگی۔پروفیسر طارق اسلام انٹرنل کوالٹی ایشیورینس سیل کے ڈائرکٹر بھی رہ چکے ہیں۔ وہ انڈین کاؤنسل فار فلوسفیکل ریسرچ کے پروجیکٹ ’’پالیٹیکل اسلام: اٹس فلوسفی اینڈ ریمی فکیشنس‘‘ پر کام کر رہے ہیں۔ وہ سینئر موسٹ پروفیسر ہونے کے ناطے شعبہ کے سربراہ مقرر کئے گئے ہیں۔

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker