ہندوستان

سیاسی مہرا نہیں ، مورچہ سنبھالیں مسلمان: اشفاق رحمن

بہتری کی امید میں بدحالی کی چادر کب تک اوڑھے رہے گی ملت: جے ڈی آر
پٹنہ28اپریل(بصیرت نیوزسروس)
جنتا دل راشٹر وادی کا کہنا ہے کہ سبھی سیاسی جماعتوں نے مسلمانوں کے بھروسہ کو توڑا ہے اور ان کے جذبات سے کھلواڑ کیا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ آج ہندوستان کی پچیس کروڑ آبادی زندگی کے سبھی شعبوںمیں حاشیہ پر کھڑی ہے۔ مسلمانوں کی حالت ہریجنوں سے بھی بدتر ہے۔جواں سال مسلم رہنما اور جے ڈی آر کے قومی کنوینر اشفاق رحمن کہتے ہیں کہ سرکاری اور پرائیوٹ نوکریوں میں ہمارا فیصد سب سے کم ہے۔ آبادی کے لحاظ سے ہماری نمائندگی کہیں نہیں ہے۔ لیکن جیلوں میں ہم اپنی آبادی کے تناسب سے دو گنے ضرور ہیں۔روزگارکے شعبہ میں ہماری موجودگی صرف نام بھر ہے۔ سیاست کے میدا ن میں بھی مسلمان صرف مہرا کے بطور استعمال ہوتے رہے ہیں۔ موجودہ حالات میں قیادت کا مسئلہ سنگین ہے۔آزادی کے بعد سے قیادت کا بحران آرمی ودائوٹ جنرل کی طرح ہے۔ آج ہر طرف نا امیدی ہے۔ تھوڑی بہت مسلم قیادت ہے بھی ، وہ مسلمانوں کے مسائل پر خاموشی کی چادر اوڑھ کر سوتی رہی ہے۔ حد تو یہ ہے کہ مسلمانوں کی پسماندگی کا استعمال خود ساختہ سیکولر جماعتوں اور ملی رہنمائوںنے اپنی لیڈری چمکانے کے لیے کیا ہے۔ نتیجتاً ملت کی بدحالی بڑھتی رہی اور خوف کی سیاست میں ان کی آوازوں پر پہرے بیٹھا دیئے۔ جنتا دل راشٹر وادی اس جمود کو توڑنے کی پہل لگاتار کررہی ہے۔ ہمارا ماننا ہے کہ مسلمانوں کوبدحالی کے غارسے نکالنے کی جہت کی جائے اور اس سلسلے میں ملی درد رکھنے والے رہنمائوں اور تنظیموں کو ایک منچ پرسرجوڑکربیٹھایا جائے تاکہ مسلمان صرف سیاسی مہرا نہیں بلکہ ہندوستانی سیاست میں اصل محاذ سنبھالنے والے بنیں۔لیکن یہ تب ہی ممکن ہے جب ہم سب اپنے مفاد کی قربانی دینے کو تیار ہوں۔ آج مسلمان چند سکوں میں بکنے کو تیار بیٹھے ہیں۔ کہیں مسلکی جھگڑا ہے تو کہیں ذاتی گروہ بندی اور یہ مسئلے ہمیں ایک امہ کے بطور کھڑا ہونے میں مشکلات پیش کررہے ہیں۔ بڑی چالاکی سے سیاسی جماعتوں نے ہمیں کمیونلزم ، سیکولرزم کے جھگڑے میں الجھا کر رکھا ہے۔ جس کے نتیجے میں ہم اقتدار کی لڑائی میں ہمیشہ پچھڑ جاتے ہیں اور ہمارے ووٹ پر وہ ملائی کھاتے ہیں۔ اقتدار کی خاطر کمیونلزم سے ہاتھ ملانے میں بھی سیاسی جماعتوں کو کبھی پرہیز نہیں رہا ہے۔سیکولرزم ان کے لیے صرف ایک کھلونا ہے۔ آج ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم اپنے مسئلے پر متحد ہوں ، اپنی قیادت کو مضبوط کریں اور بدحالی کی تصویر کو بدل دیں۔ بہتری خود ہمارے گھر پر دستک دینے آئے گی۔

Tags

Sajid Qasmi

غفران ساجد قاسمی تعلیمی لیاقت : فاضل دارالعلوم دیوبند بانی چیف ایڈیٹر بصیرت آن لائن بانی چیف ایڈیٹر ہفت روزہ ملی بصیرت ممبئی بانی و صدر رابطہ صحافت اسلامی ہند بانی و صدر بصیرت فاؤنڈیشن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker