ہندوستان

ایک ماں کی وجہ سے بریلوی اور دیوبندی مسلمان ساتھ آئے : توقیر رضا خان

نئی دہلی، ۳۰؍مئی: نبیرہ اعلیٰ حضرت مولانا توقیر رضا خان نے حال ہی میں دارالعلوم دیوبند کا دورہ کیا تھا یہ کوئی عام واقعہ نہیں ہے ، دیوبندی اور بریلیوں کے درمیان طویل عرصے سے اختلافات ہیں۔ پھر اچانک ایسا کیا ہو گیا، جو یہ دونوں ایک ساتھ آ گئے۔ انڈین ایکسپریس کی رپورٹ کے مطابق، ان دونوں فرقوں کو قریب لانے کے پیچھے ‘ایک ماں کے آنسو ہیں۔ مولانا توقیر رضا نے انڈین ایکسپریس سے کہا کہ ‘ہمارے بچوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ اب وقت آ گیا ہے کہ ایسے لوگوں سے لڑا جائے جو مسلم نوجوانوں کو جیل کی سلاخوں کے پیچھے ڈال رہے ہیں۔ واضح رہے کہ مولانا ‘ توقیر رضا ’’بریلوی موومنٹ ‘‘ کے بانی اور مولانا احمد رضا خان علیہ الرحمہ کے پوتے ہیں۔ مولانا توقیر رضا نے کہا، ‘مالیگاؤں کو دیکھئے۔ ہمارے لڑکوں کو سزا دی جا رہی ہے یہاں تک کہ کئی دہائیوں تک ٹرائل کے لئے جیل میں رکھا گیا اور چھوڑ دیا گیا تب تک ان کا مستقبل برباد ہوگیا۔ اچھا مسلمان یا برا مسلمان جیسی کوئی بات نہیں ہے، اس کے خلاف متحد ہونے کا وقت ہے. ہم سب حکومت کی دوہری پالیسی کے شکار ہیں۔ ‘مولانا نے مزید بتایا کہ وہ ایک ماں کے آنسوؤں کی وجہ دیوبند پہنچے۔ واضح رہے کہ حال ہی میں شاکر انصاری کو بم دھماکوں کے معاملے میں گرفتار کیا گیا تھا۔ معلومات کے مطابق، مئی کے آغاز میں دہلی پولیس نے 13 مسلم نوجوانوں کو حراست میں لیا تھا بعد میں پولیس نے 10 نوجوانوں کو ثبوتوں کی عدم موجودگی کی بنا ء پر رہا کردیا جبکہ ساجد، سمیر احمد اور شاکر انصاری کو گرفتار کر لیا تھا۔ گرفتاری کے بعد مولانا توقیر رضا خان نے شاکر کے اہل خانہ سے ملاقات کی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ وہ دونوں مسالک کے درمیان ایک کامن مِنی مَم ایجنڈا رکھنے پر کام کر رہے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker