ہندوستان

متھراکاواقعہ حیرت انگیزاورافسوس ناک

ممبرپارلیمنٹ مولانااسرارالحق قاسمی نے ملزمین کوکیفرکردارتک پہنچانے کامطالبہ کیا
نئی دہلی،۴؍جون:جمعرات کے دن یوپی کے مشہور شہر متھرامیں پولیس اہلکاراور مسلح گروہ کے درمیان ہونے والے تصادم پرتشویش کااظہارکرتے ہوئے ممبرپارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے کہاکہ یہ واقعہ نہایت ہی حیرت انگیزبھی ہے اور افسوس ناک بھی۔انھوںنے کہاکہ ستیہ گرہ کے نام پرسیکڑو ں مرد و خواتین کے ذریعے دوسوایکڑسے زیادہ زمین پر قبضہ کیاجانااورمنظم طریقے سے خوںخوارگروہ تیارکرناجس کی مکمل خبر صوبائی و مرکزی سرکاروںکوبھی نہ ہواپنے آپ میں ایک غیر معمولی اورسنگین واقعہ ہے۔مولاناقاسمی نے یوپی کی اکھلیش حکومت سے اس گروہ کومکمل طورپربین کرنے اور ملزمین کوسخت سے سخت سزادینے کامطالبہ کیاہے۔واضح رہے کہ گزشتہ جمعرات کومتھرامیںپولیس اہلکاروںاور مسلح گروہ کے درمیان اچانک تصادم ہواتھا،جس میں ایس ایچ او اورایس پی سمیت ۲۲؍جنگجوافراد کی بھی ہلاکت ہوئی ہے،جبکہ ۲۳؍پولیس اہلکارزخمی ہوئے ہیں۔مولاناقاسمی نے کہاکہ ستیہ گرہ کے نام پر دہشت گردافرادتیار کرنے والے اس گروہ کے ساتھ سختی سے نمٹناہوگا،ورنہ اس قسم کی جماعتیں قومی سلامتی کے لیے سخت خطرہ بن سکتی ہیں۔ممبرپارلیمنٹ نے کہاکہ گزشتہ دنوںبجرنگ دل کے ذریعے مسلح ٹریننگ دیے جانے اور اب ایک نئے مسلح گروہ کے منظرعام پرآنے سے یہ صاف ہوگیاہے کہ ملک کوکس قسم کے عناصر سے خطرہ ہے ،ایسے میں صوبائی ومرکزی حکومتوں کوچاہیے کہ ان عناصرپرکڑی کارروائی کریں اور دہشت گردی کی تمام تر صورتوںپرروک لگائیں۔مولانانے کہاکہ اس کی بھی جانچ ہونی چاہیے کہ متھراکے اس خونیں گروہ کوہتھیاراورمال واسباب کے ذخائرکہاں سے فراہم کیے جاتے تھے اورآخروہ اتنی بڑی افرادی قوت تیار کرنے پرکیسے قادرہوگئے؟

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker