مسلم دنیا

حلب میں جھڑپوں میں کم سے کم 70 جنگجو ہلاک

بیروت، ۱۵؍جون: (ایجنسی) شام کے شمالی صوبہ حلب میں گذشتہ چوبیس گھنٹے کے دوران صدر بشارالاسد کی وفادار فورسز ،انتہا پسند جنگجوؤں اور باغیوں کے درمیان جھڑپوں میں کم سے کم ستر جنگجو ہلاک ہوگئے ہیں۔برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق نے بدھ کے روز اطلاع دی ہے کہ حکومت نواز جنگجوؤں نے شامی اور روسی فضائیہ کی مدد سے حلب شہر کے جنوب مغرب میں واقع دو دیہات زیتن اور خالصہ کا کنٹرول واپس لے لیا ہے۔درایں اثناء شامی حکومت نے کہا ہے کہ شمالی شام میں فرانسیسی اور جرمن فورسز موجود ہیں لیکن جرمنی نے اس الزام کی تردید کی ہے۔شام کے سرکاری میڈیا نے کہا ہے کہ حکومت عین العرب (کوبانی) اور منبج میں فرانسیسی اور جرمن فورسز کی موجودگی کی سختی سے مذمت کرتی ہے۔شام کی سرکاری خبررساں ایجنسی سانا نے وزارت خارجہ کا ایک بیان نقل کیا ہے جس میں اس نے کہا ہے کہ ”شام اس کو اپنی خودمختاری اور آزادی پر ایک ننگی اور بلاجواز جارحیت تصور کرتا ہے”۔جرمنی کی وزارت دفاع نے اس دعوے کی تردید کی ہے کہ شمالی شام میں جرمن اسپیشل فورسز موجود ہیں۔اس نے کہا ہے کہ اس حوالے سے شامی حکومت کے بار بار کے دعوے درست تھے اور نہ ہوسکتے ہیں۔وزارت کے ترجمان نے کہا کہ ”شام میں جرمنی کی خصوصی فورسز موجود نہیں ہیں۔اس حوالے سے الزام بالکل جھوٹ ہے”۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker