ہندوستان

’مسلمانوں میں اتحاد کی مولانا توقیر رضا خان کی کوششوں میں جمعیۃ علماء ان کے ساتھ ہے‘ 

ضروری ہے کہ دلت، عیسائی، مسلم اور ملک کی اقلیتیں ظلم کے خلاف ایک پلیٹ فارم پر کھڑی ہوجائیں: مولانا سیدا رشد مدنی
ممبئی،۵؍اگست: (شکیل رشید)’’ہم مولانا توقیر رضا خان کے اتحاد امت کے جذبے میں ان کے ساتھ پوری طرح سے شامل ہیں، مسلمانوں میں انتشار کے خلاف ان کی تحریک کی ہم قدر کرتےہیں اور ان کےنیک جذبے کو دیکھتے ہوئے ہم نے انہیں عید ملن کی تقریب میں مدعو کرکے انہیں کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی کی داہنی جانب بٹھایا تھا اور خود بائیں جانب بیٹھے تھے‘‘۔ یہ جملے آج یہاں ’’ممبئی اردونیوز‘‘ سے بات کرتے ہوئے صدر جمعیۃ علماء ہند مولانا سید ارشد مدنی نے کہے۔ مسلمانوں میں انتشار اور اختلافات ختم کرنے کے لئے مولانا توقیر رضا خان کے دورۂ دیوبند کو سراہتے ہوئے مولانا ارشد مدنی نے کہاکہ ’’ہم مولانا توقیر رضا خان کو اپنے پروگرام میں مدعو کریں گے تاکہ اتحاد امت کی کوششوں کو آگے بڑھا سکیں، ہم نے تو اس وقت جب ملک کے وزیراعظم نریندر مودی نے صوفی ازم کے نام پر ایک اجلاس کراکے مسلمانوں کو مسلک کے نام پر تقسیم کرنے کی کوشش کی تھی یہ کہا تھا کہ مسلمانوں کا اللہ ایک ہے، رسولﷺ ایک ہیں، شریعت ایک ہے، کلمہ ایک ہے، قرآن پاک ایک ہے تو پھر ان میں اختلاف کیا ہے! مسلمان بنام مسلمان ایک ہیں اور ہماری یہی کوشش ہے کہ آج کے حالات میں متحد ہوکر ایک پلیٹ فارم پر آجائیں‘‘۔ مسلمانوں میں اتحاد اور م لک کے پچھڑے طبقات بالخصوص دلتوں پر ہورہے مظالم کے خلاف ان کے ساتھ کھڑا ہونے کی جمعیۃ علماء کی کوششوں کا ذکر کرتے ہوئے مولاناارشد مدنی نے کہاکہ ’’جمعیۃ علماء جہاں مسلمانوںکو متحد کرنے کے لئے کوشاں ہے وہیں وہ اس ملک کے مظلوم طبقات کے ساتھ کھڑا ہوکر ان کی جدوجہد میں ساتھ دینے کےلئے بھی تیار ہے، ہم نے دہلی کے اندرا گاندھی اسٹیڈیم میں دلت برادری کے رہنمائوں کے ہمراہ دلت مسلم اتحاد کی ایک کوشش کی تھی جس میں خاطر خواہ کامیابی نہیں ملی مگر ہماری یہ کوشش ختم نہیں ہوئی ہے ،ہم اکتوبر میں رام لیلا میدان میں اقلیتوں کے اتحاد کے لئے ایک اجلاس کررہے ہیں جس میں دلتوں کے علاوہ عیسائی بھی مسلمانوں کے ساتھ شریک ہوں گے، مظلوم طبقات کو ایک پلیٹ فارم پر لانا ہمارا مقصد ہے، دلتوںکی گئو رکشا سمیتی کے غنڈوں کے ہاتھوں پٹائی پر ہم دلتوں کے ساتھ کھڑے ہوئے ہیں، اونا کے سانحے پر ہم نے آواز اُٹھائی ہے، جمعیۃ علماء گجرات ان کے ساتھ ہے، احمد آباد میں دلتوں کے اس سملین میں ہمارے نمائندے شریک تھے جس میں انہوں نے یہ اعلان کیا تھا کہ ہم اب مردہ جانوروں کو ٹھکانے نہیں لگائیں گے، ہم آئندہ بھی ان کی تحریکوں میں ان کے ساتھ شامل رہیں گے۔ اب یہ ضروری ہوگیا ہے کہ فرقہ پرستوں کے مظالم کے خلاف مسلمان، دلت عیسائی اور اس ملک کی تمام اقلیتیں ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا ہوجائیں‘‘۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker