ہندوستان

قرآن کریم، حدیث اور شریعت پر کسی قسم کی بحث قبول نہیں کی جائے گی

مہتمم دارالعلوم وقف دیوبند ، پرسنل لاء بورڈ کے نائب صدر مولانا سالم قاسمی کا دو ٹوک اعلان
دیوبند، ۸؍اکتوبر: (سمیر چودھری) آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے سینئر نائب صدر اور دارالعلوم وقف کے صدر مہتمم مولانا محمد سالم قاسمی نے کہا کہ مرکزی حکومت کا مسلم پرسنل لا بورڈ میں مداخلت کر کے سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کرنا انتہائی افسوسناک ہے۔انہوں نے کہا کہ قرآن کریم، حدیث اور شریعت پر کسی قسم کی بحث قبول نہیں کی جائے گی، مسلمان کو اس کا حق حاصل ہے کہ وہ اسلامی تعلیم کے مطابق اپنی زندگی گزارے، مرکزی حکومت کی مذہبی معاملات میں مداخلت مسلمانوں کے استحقاق پر حملہ اور ہندوستانی روایات کے خلاف ہے۔معروف وکیل چودھری جاں نثار ایڈوکیٹ نے مرکزی حکومت کے حلف نامہ کو بی جے پی حکومت کا ووٹ بینک اسٹنٹ قرار دیا اور کہاکہ اس کے ذریعہ اکثریتی فرقہ کو متحدکرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔انہوں نے قانونی باریکیاں بتاتے ہوئے کہاکہ مسلم پرسنل لاء میںترمیم کرنا آسان نہیں ہے اس کے بعد حکومت کو ہندو لاء، کرشچن لاء، اور بدھشٹ لاء میں تبدیلی کے لئے تیار رہنا چاہئے ،ساتھ ہی جمہوریت کامطلب بھی سمجھناچاہئے۔ موصوف نے کہاکہ اس میں کسی قسم کی مذاکرات کی ضرورت بالکل نہیں ہے بلکہ ملی رہنماؤں کومتحدہ طورپر اپنا اعتراض درج کرانا چاہئے ساتھ ہی کورٹ میں بھی آئین کے ذریعہ دیئے گئے اختیارات کے تحت مضبوط دلائل پیش کئے جائیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker