ہندوستان

دو مسلم امیدواروں کے ساتھ ضلع کی ساتوں سیٹوں پر مایاوتی نے دیئے ٹکٹ

مسلم ووٹوں پر فوکس،معاویہ علی کی اکھلیش سے بڑھتی قربتیں موضوع بحث،کانگریس کو اتحاد کی امید
دیوبند،6؍ جنوری(سمیر چودھری) صوبہ میں انتخابات کے اعلان کے ساتھ ہی پارٹیوںنے اپنے اپنے امیدواروںکے ناموں کا اعلان شروع کردیاہے،حالانکہ سماجوادی پارٹی میں جاری تنازعہ کے سبب پارٹی امیدوار تذبذب کی کیفیت میں ہیںاور امید بھری نگاہوں سے لکھنؤ کی طرف دیکھ رہے ہیں،وہیں دیوبند کے رکن اسمبلی معاویہ علی کی سماجوادی پارٹی سے بڑھتی قربتیں بھی علاقہ میں موضوع بحث بنی ہوئی، جبکہ کانگریس نے اپنے امیدواروں کی پہلی فہرست میں 20؍ اراکین اسمبلی کے ٹکٹ فائنل کردیئے ہیں جن میں دیوبند سے معاویہ علی کانام شامل ہے۔ بی ایس پی نے ضلع کی ساتوں سیٹوں پر دو مسلم،دو دلت ،دوگوجر اور ایک برہمن ٹکٹ دے کر تمام طبقات کے ووٹ حاصل کرنے کا جال بچھا دیا ۔ مایاوتی نے ٹکٹ فائنل کرتے ہی انتخابات میں جیت حاصل کرنے کے لائحہ عمل پر گفت شنید کے لئے تمام امیدواروں کو لکھنؤ بلا لیاہے۔جس میں خاص طورپر مسلمانوں ووٹروں کو پارٹی کے حق میں کئے جانے کی چرچائیں زور شور سے چل رہی ہیں۔ سماجوادی پارٹی کے دوخیموں کے امیدواروں کے پہلی فہرست منظر عام پر آچکی ہے،ملائم سنگھ نے ساتوں امیدواروںکااعلان کیاجبکہ اکھلیش یادو نے ابھی تک دیوبند،نکوڑ اور رامپور منیہاران کے امیدواروں کا ہی اعلان ہی کیاہے۔ بی جے پی نے ابھی تک اپنے کسی بھی امیدوار کانام جاری نہیں کیا بتایا جارہاہے کہ 16؍ جنوری تک بی جے پی بھی اپنے ٹکٹ فائنل کردے گی۔ بی ایس پی نے بہٹ سے معروف سماجی خدمتگار حاجی محمد اقبال کو اپناامیدوار بنایا جبکہ دوسرے مسلم امیدواروں کے طورپر دیوبند اسمبلی سیٹ سے ماجد علی کو ٹکٹ دیاگیاہے۔ سہارنپور دیہات سے دلت امیدوار و رکن اسمبلی جگپال اور رامپور منہیاران (محفوظ) سے ایم ایل اے روندر مولہوکو ایک مرتبہ پھر موقع ملاہے۔ نکوڑ سے گوجر برادری کے نوین چودھری اور گنگوہ سے بھی گوجر برادری کے سابق رکن اسمبلی مہی پال ماجرہ کو ٹکٹ دیاگیا۔جبکہ سہارنپور شہر سے برہمن کے نام پر مکیش دکشت کو ٹکٹ دے کر تمام طبقات کو ساتھ لانے کی کوشش کی گئی۔ ٹکٹ کے اعلان کے ساتھ ہی مایاوتی نے تمام امیدواروں کو لکھنؤ بلا لیاہے اور امیدواروںکو جیت کا فارمولہ دیا جارہاہے۔ پارٹی ذرائع کے مطابق س مرتبہ مایاوتی کا پورا فوکس مسلم ووٹروں پر ہے اوروہ دلت مسلم اتحاد سے یوپی کوفتح کرنا چاہتی ہے، اس میٹنگ میں بھی مسلم ووٹروںکو اپنے مفاد میں کرنے کے طریقہ کار پر غور و خوض کیاجارہاہے،ذرائع کی مانیں تو میٹنگ میں ایسے فارمولہ اور اسکیمیں بھی زیر غور ہیں جن کے ذریعہ مسلم ووٹ متحدہ طورپر پارٹی کے حق میں جاسکے۔ وہیں مایاوتی سماجوادی پارٹی کے آپسی خلفشار کو بھی کیش کرنے کی پوری کوشش میں ہیں اسلئے انہوں نے ریاست بھر ایکسو مسلم امیدواروںکو ٹکٹ دے کر جتانے کی کوشش کی ہے کہ مسلم سماج کو حصہ داری بی ایس پی میں ہی مل سکتی ہے۔ کانگریس کی بھی پوری نظر مسلم ووٹروں اور سماجوادی پارٹی سے اتحاد پر ہے تو دیوبند سے رکن اسمبلی معاویہ علی کی وزیراعلیٰ اکھلیش یادو سے بڑھتی قربتیں یہاں کئی روز سے موضوع بحث بنی ہوئی ہے۔حالانکہ کانگریس کی جانب سے امیدواروں کی پہلی فہرست جاری کردی گئی ہے جس میں معاویہ علی کو دیوبند سے امیدوار بنایا گیاہے۔ اس بابت معاویہ علی سے گفتگو کی کوشش کی گئی لیکن ان سے بات نہیں ہوسکی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker