ہندوستان

اختلافات کے باوجود پارلیمنٹ میں آسانی سے کام ہونا چاہیے :مودی

نئی دہلی، 30؍جنوری:بجٹ سیشن کے دوران پارلیمنٹ کے کام کاج کو صحیح طریقہ سے چلانے میں سبھی پارٹیوں سے تعاون کی اپیل کرتے ہوئے وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ پارلیمنٹ ’مہا پنچایت‘ہے اور الیکشن کے وقت میں اختلافات ابھر کر سامنے آنے کے باوجود اس کو آسانی سے کام کرنا چاہیے ۔حکومت نے کل سے شروع ہو رہے بجٹ اجلاس سے پہلے کل جماعتی اجلاس طلب کیا تھا ،اس اجلاس میں ترنمول کانگریس کے علاوہ سبھی پارٹیوں نے حصہ لیا کیونکہ سمجھا جاتا ہے کہ وہ نوٹ بند ی اور چٹ فنڈ معاملات میں اپنے کچھ ممبران پارلیمنٹ کی گرفتاری سے ناراض ہے۔اس سے پہلے نوٹ بند ی کے معالے پر اپوزیشن جماعتوں کے احتجاج اور شور شرابہ کی وجہ سے پارلیمنٹ کے سرمائی اجلاس میں خاطر خواہ کام کاج نہیں ہو سکا تھا۔حکومت نے حالانکہ اس بات پر زور دیا کہ بجٹ مقررہ وقت پر پیش کیا جائے گا اور اس بارے میں اپوزیشن کے ان الزامات کو مسترد کر دیا کہ اس سے کچھ ریاستوں میں ہونے والے انتخابات متاثر ہوں گے۔اجلاس کے بعد نامہ نگاروں سے بات چیت میں پارلیمانی امور کے وزیر اننت کمار نے کہا کہ میٹنگ کے دوران وزیر اعظم مودی نے سبھی پارٹیوں سے تعاون کی اپیل کی ہے اور کہا کہ انتخابات کے وقت میں ہمارے درمیان کچھ اختلافات پیدا ہو سکتے ہیں لیکن پارلیمنٹ ’مہا پنچایت‘ ہے اور اسے صحیح طریقہ سے کام کرنا چاہیے ۔کمار نے اپوزیشن جماعتوں کے ان الزامات کو مسترد کر دیا کہ حکومت کو مرکزی بجٹ وقت سے پہلے پیش نہیں کرناچاہیے ، کیونکہ اس سے آئندہ اسمبلی انتخابات میں یکساں مواقع فراہم کرنے کی پہل متاثر ہوگی۔مرکزی وزیر نے کہا کہ سپریم کورٹ اور الیکشن کمیشن نے اس موضوع پر پہلے ہی اپنا فیصلہ سنا دیا ہے۔اننت کمار نے کہاکہ بجٹ اس سال بھی ویسے ہی پیش کیا جائے گا جیسے گزشتہ سالوں میں پیش کیا جاتا تھا۔حکومت کی کوشش ہو گی کہ بجٹ کا سب کو فائدہ ملے اور ملک آگے بڑھے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker