مسلم دنیا

کویت کی جانب سے ۵؍مسلم ممالک پر ویزاپابندی جھوٹ پر مبنی

کویت کو بدنام کرنے کے لئے فرضی خبر پھیلائی گئی تھی
نئی دہلی ۔۴؍فروری: (بی این ایس) روسی نیوز ایجنسی نے اعتراف کیا ہے کہ کویت حکومت کی جانب سے پانچ مسلم ممالک کے شہریوں کے کویت آنے پر روک لگائے جانے والی رپورٹ جھوٹ پر مبنی تھی۔غور طلب ہے روس کی سپتنک نامی اس نیوز ایجنسی نے 2 فروری کو یہ رپورٹ شائع کی تھی کہ کویت حکومت نے پاکستان سمیت شام، افغانستان، ایران اور عراق کے شہریوں کو ویزا دینے سے انکار کر دیا ہے۔رپورٹس کے مطابق، کویت حکومت نے یہ قدم اس لیے اٹھایا جس سے ان ممالک کے شدت پسند مسلم شہری اس ملک میں داخل نہ ہوسکیں۔ اس رپورٹ کو ہندوستانی خبر رساں ایجنسی آئی اے این ایس سمیت ملک کی کئی معروف خبر رساں ایجنسیوں نے ریلیز کی تھی۔روسی نیوز ایجنسی نے اس رپورٹ کو کہ ‘کویت نے پانچ مسلم ممالک کے شہریوں کے کویت لاگ ان پر روک لگانے کے عنوان سے فلیش کیا تھا۔ اس رپورٹ میں کویت کے کسی بھی افسر کا حوالہ نہیں دیا گیا تھا۔ رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ کویت نے یہ پابندی امریکہ کے طرز پر عائد کی ہے۔ اس رپورٹ کو ہندوستانی اخبارات نے یو این آئی کے حوالے سے لگائی تھی جبکہ عرب میڈیا یا امریکن میڈیا کے پاس یہ رپورٹ نہیں تھی ۔آئی اے این ایس نے کویت میں پاکستانی سفیر غلام دستگیر کے حوالے سے اسی شام کو خبر ریلیز کی تھی جس کویت کی جانب سے پانچ مسلم ممالک کے شہریوں کے کویت لاگ ان پر روک لگائے جانے کو بے بنیاد بتایا گیا تھا۔
اس کے بعد ’سپتنک ‘ نیوز ایجنسی نے تسلیم کیا کہ رپورٹ غلط تھی۔واضح رہے کہ جنوری ماہ کے آخر میں امریکہ کے نئے صدر ٹرمپ نے جن ممالک کے شہریوں کے امریکہ آنے پر روک لگائی گئی ان میں عراق، ایران، شام، لیبیا، یمن، سوڈان اور صومالیہ شامل ہیں۔تاہم اس حکم کے خلاف ٹرمپ کو دنیا بھر سے مخالفتوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

Back to top button
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker