Baseerat Online News Portal

یوپی میں بی جے پی کو اکثریت ملنے سے بہار کے مهاگٹھ بندھن میں دراڑ: بی جے پی

پٹنہ، 11 مارچ (یو این آئی) بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے اترپردیش اسمبلی انتخابات کے نتائج آنے کے بعد کہا کہ ریاست میں بی جے پی کو اکثریت ملنے سے بہار میں حکمراں مهاگٹھ بندھن میں دراڑ پڑنے لگی ہے ۔ بی جے پی کے سابق ریاستی صدر اور اسمبلی الیکشن میں اودھ حلقہ کے انچارج منگل پانڈے نے آج یہاں پریس کانفرنس میں اتر پردیش اور اتراکھنڈ میں پارٹی کو اکثریتی جیت ملنے پر کہا کہ آر جے ڈی کے سینئر لیڈر رگھونش پرساد سنگھ کی جانب سے وزیر اعلی نتیش کمار پر یوپی انتخابات میں بی جے پی کی مدد کرنے کا الزام لگائے جانے کے بعد مهاگٹھ بندھن کے تینوں دھڑوں میں گھمسان یہ ثابت کرتا ہے کہ انتخابات کے نتائج سے مهاگٹھ بندھن میں دراڑپڑنے لگی ہے۔ واضح رہے کہ راشٹریہ جنتا دل کے لیڈر رگھونش سنگھ نے یوپی انتخابات کے نتائج آنے کے بعد مسٹرنتیش کمار پر دھوکہ دینے کا الزام لگاتے ہوا کہا ہے کہ وزیر اعلی نے پہلے تو نوٹ بندي پر مرکزی حکومت کی تعریف کی، پھر انہوں نے اتر پردیش انتخابات میں بھی بی جے پی کی مدد کی۔ انہوں نے عوام کو دھوکہ دیا ہے۔وہیں، جے ڈی یو کے ترجمان سنجے سنگھ نے ان کے بیان پر جوابی حملہ کرتے ہوئے کہا کہ رگھونش پرساد پٹری سے اتر گئے ہیں اور اب ان کو برداشت نہیں کیا جائے گا۔انہوں نے مسٹر سنگھ کے غیر ذمہ دارانہ بیان کے سلسلے میں آر جے ڈی کے صدر لالو یادو سے ان کو فوری طور پر برطرف کرنے کا مطالبہ کیا۔ دریں اثناء، کانگریس کے ریاستی صدر اور بہار کے وزیر تعلیم اشوک چودھری نے کہا کہ مسٹر رگھوونش سنگھ مهاگٹھ بندھن کو نقصان پہنچا رہے ہیں اور انہیں سوچ سمجھ کر بیان دینا چاہئے۔

You might also like